حکومت کے پاس کوئی اختیار نہیں،وہ نواز شریف کے باہر جانےکی ذمہ داری بھی عدالتوں پر ڈالنا چاہتی ہے:سراج الحق

حکومت کے پاس کوئی اختیار نہیں،وہ نواز شریف کے باہر جانےکی ذمہ داری بھی ...
حکومت کے پاس کوئی اختیار نہیں،وہ نواز شریف کے باہر جانےکی ذمہ داری بھی عدالتوں پر ڈالنا چاہتی ہے:سراج الحق

  



اسلا م آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں سیاسی حکومت کے پاس کوئی اختیار نہیں،اسی لیے وہ میاں نواز شریف کے باہر جانے کے معاملے کی ذمہ داری بھی عدالتوں پر ڈالنا چاہتی ہے،حکومت دماغ اور قوت فیصلہ دونوں سے محروم ہے،رول آف لاء نہ ہونے کی وجہ سے سیاست اور جمہوریت تباہ ہوچکی ہے،تمام ادارے اپنا اعتماد کھوچکے ہیں،قانون عام آدمی کے لیے لوہے کے چنے اور بااثر کے لیے موم کی ناک بن چکا ہے۔

سینیٹ اجلاس میں شرکت کے بعدپارلیمنٹ کے باہر میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئےسینیٹر سراج الحق نے کہا کہ میاں نواز شریف کے علاج کے لیے باہر جانے سے حکومت ڈرتی ہے کہ اس پر کوئی ذمہ داری نہ آجائے، اس لیے اس معاملے کو بھی عدالتوں پر ڈال رہی ہے،حکومت کی اب تک کوئی سمت ہے نہ اسے اپنی نااہلی ،ناکامی اور عوام کے اندر بڑھتی ہوئی بے چینی کا کوئی ادراک ہے،ملک میں قانون کی حکمرانی نہیں جس کی وجہ سے تمام ادارے تباہی کے دھانے پر ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکمران کوئی بھی قدم اٹھانے کے قابل نہیں رہے،ایسا لگتا ہے کہ ملک میں سرے سے حکومت نام کی کوئی چیز نہیں۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ مہنگائی ناقابل برداشت ہوچکی ہے اور عام آدمی فاقہ کشی پر مجبور ہے،دال سبزی پر گزارہ کرنے والا سفید پوش طبقہ پس کررہ گیا ہے،سبزی گوشت کی قیمت پر مل رہی ہے،سو روپے میں دو کلو آٹا نہیں آتا،ادرک پیاز اور ٹماٹر جیسی سبزیوں کی قیمتیں آسمان پر پہنچ گئی ہیں،ملک میں روزگار ختم ہو کررہ گیا ہے،اب تو مزدوروں کو بھی روزانہ مزدوری نہیں مل رہی جس کی وجہ سے اس کے لیے اپنے بچوں کا پیٹ پالنا مشکل ہوگیا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ عوام کے صبر کا پیمانہ دن بدن لبریز ہوتا جارہا ہے،اگر یہی صورتحال رہی تو عوام زیادہ دیر حکمرانوں کو برادشت نہیں کریں گے اور گھروں میں بھوک سے مرنے کی بجائے حکمرانوں کے گریبان پکڑنے کے لیے اٹھ کھڑ ے ہونگے۔

مزید : قومی