حکومت ٹیکسٹائل کے برآمدی شعبے کیلئے جلد ریلیف پیکیج کا اعلان کرے: لاہورچیمبر

حکومت ٹیکسٹائل کے برآمدی شعبے کیلئے جلد ریلیف پیکیج کا اعلان کرے: لاہورچیمبر

لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (آپٹما) سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ اس اہم برآمدی شعبے کے لیے جلد از جلد ریلیف پیکیج کا اعلان کرے۔ ایک بیان میں لاہور چیمبر کے صدر شیخ محمد ارشد نے کہا کہ زیادہ پیداواری لاگت اور دیگر مسائل کی وجہ سے نہ صرف پاکستانی ٹیکسٹائل مصنوعات عالمی منڈی میں اپنی جگہ کھورہی ہیں بلکہ بے روزگاری کا گراف بھی بڑھتا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ پیداواری لاگت کی وجہ سے ٹیکسٹائل انڈسٹری کو پہلے ہی مسائل کا سامنا تھا، ایسے میں توانائی کا بحران جلتی پر تیل کا کام کررہا ہے لہذا حکومت کو وقت ضائع نہیں کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کا سب سے بڑا برآمدی اور روزگار کی فراہمی کے حوالے سے دوسرا بڑا شعبہ ہونے کی حیثیت سے ٹیکسٹائل انڈسٹری کی بندش کے تباہ کن نتائج برآمد ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ پالیسی سازوں کو اس حقیقت کا ادراک ہونا چاہیے کہ ٹیکسٹائل انڈسٹری کی بندش سے نہ صرف لاکھوں ورکرز بے روزگار ہوجائیں گے بلکہ حکومت کو بھی محاصل کی مد میں بھاری نقصان ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں کم از کم چار سو ٹیکسٹائل ملز نے بطور احتجاج ایک روز کے لیے پیداوار بند رکھنے کا اعلان کیا ہے جس سے ایک طرف تو قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان ہوگا اور دوسری طرف غیرملکی سرمایہ کاروں کو بھی منفی پیغام ملے گا۔ شیخ محمد ارشد نے کہا کہ اس وقت جب خطے کے دیگر ممالک تیزی سے ترقی کررہے ہیں، ہماری ٹیکسٹائل برآمدات میں کمی پالیسی سازوں کے لیے لمحہ فکریہ ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت جب ہم برآمدات میں اضافے کی باتیں کررہے ہیں، ٹیکسٹائل انڈسٹری کا بلیک ڈے تمام کوششوں کو بیک گیئر لگا دے گا لہذا حکومت ٹیکسٹائل انڈسٹری کے لیے فوری ریلیف پیکیج کا اعلان کرے۔

مزید : کامرس


loading...