ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات کی خریدوفروخت عروج پر ، 470سٹوروں کو ڈی سیل کر دیا گیا

ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات کی خریدوفروخت عروج پر ، 470سٹوروں کو ڈی سیل کر دیا ...

لاہور( جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت کے 60فیصد سے زائد میڈیکل سٹوروں میں سرکاری ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات کی خرید و فروخت کا دھندہ عروج پر پہنچ گیا ہے اس سلسلے میں قابل ذکر امر یہ ہے کہ گزشتہ 3ماہ کے دوران جن 470میڈیکل سٹوروں پر چھاپے مار کر جو کروڑوں روپے مالیت کی مہر شدہ سرکاری ادویات پکڑی گئی تھیں ان سٹوروں کو دوبارہ کھول دیا گیا ہے جس کے باعث اب سرکاری ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات کا دھندہ دوبارہ شروع ہو گیا ہے ۔دوسری طرف سرکاری ادویات کی چوری میں ملوث ہسپتالوں کے مافیا کی سرپرستی بعض ہسپتالوں کے میڈیکل سپریٹنڈنٹ کرتے ہیں جس کا عملی ثبوت یہ ہے کہ لاہور کے تمام بڑے ہسپتالوں کے میڈیکل سپریٹنڈنٹس نے ڈرگ کورٹ میں تحریری بیانات جمع کروائے جس میں کہا گیا کہ جن میڈیکل سٹوروں سے چوری کی مہریں لگی ہوئی سرکاری ادویات برآمد ہوئی ہیں یہ ادویات ان کی نہیں ہیں جس سے ڈرگ کورٹ نے یہ کیس مجبوراً داخل دفتر کر دیا ۔ڈرگ کورٹ کے ذرائع کے مطابق جن میڈیکل سٹوروں سے سرکاری ادویات برآمد ہوتی ہیں محکمہ صحت لاہور کے ڈرگ انسپکٹر کیسوں کی پیروی نہیں کرتے جس کے باعث ایسے میڈیکل سٹور دوبارہ کھل جاتے ہیں حال ہی میں ایف آئی اے اور محکمہ صحت لاہور کی طرف سے چھاپے مار کر سروسز ہسپتال انڈر پاس میں واقع صغیر میڈیکل سٹور ،حمزہ میڈیکل سٹور ،لوہاری میں بسم اللہ میڈیکل سٹور ،ہجویری میڈیکل سٹور سمیت 14بڑے میڈیکل سٹور پکڑے گئے جہاں جناح ،جنرل ،گنگا رام ،میو ،لیڈی ایچیسن ، شیخ زید ،لیڈی ولنگڈن ،میاں منشی ،کوٹ خواجہ سعید ہسپتال سمیت دیگر سرکاری ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات پکڑی گئی تھیں ان میں سے زیادہ تر کیسز محکمہ صحت کے ڈرگ انسپکٹروں نے موقع پر رفعہ دفعہ کر دیئے بعض کے کیسز نہ بھجوائے گئے جن اکا دکا میڈیکل سٹوروں کے کیسز بھجوائے گئے وہ عدم پیروی کی وجہ سے دوبارہ کھل گئے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس وقت بھی مذکورہ ہسپتالوں کے سامنے واقع میڈیکل سٹوروں پر سرکاری ہسپتالوں کی مہرشدہ ادویات مہنگے ترین انجکشنز ،برنولے ،سرنجیں کھلے عام فروخت ہو رہے ہیں سرکاری ہسپتالوں سے چوری شدہ ادویات دوبارہ ان ہی ہسپتالوں کے مریضوں کو فروخت کی جاتی ہیں اور پکڑے جانے پر موقع پر ہی مک مکا کر کے کیس داخل دفتر کیے جاتے ہیں اس موقع پر سیکرٹری صحت جواد رفیق ملک کا کہنا ہے کہ اس کا سختی سے نوٹس لیا جائے گا اور ہر ٹاؤن کے ڈرگ انسپکٹر کو پابند بنایاجائے گا کہ وہ روزانہ کی بنیاد پر ہر ہسپتال کے باہر واقع میڈیکل سٹوروں کا معائنہ کریں اور جس سٹور سے سرکاری ادویات پکڑی جائیں اس کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائے اور اس بات کو لازمی بنایا جائے کہ آئندہ ایسا میڈیکل سٹور ڈی سیل نہ ہو۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...