تحریک انصاف کا این اے 122میں دوبارہ گنتی کا مطالبہ مسترد ، درخواست تاخیر سے ملی ریٹرننگ افسر

تحریک انصاف کا این اے 122میں دوبارہ گنتی کا مطالبہ مسترد ، درخواست تاخیر سے ...

  لاہور(خبر نگار خصوصی،مانیٹرنگ ڈیسک ) قومی اسمبلی کے حلقہ122سے تحریک انصاف کے اُمیدوار قومی اسمبلی عبدالعلیم خان نے ریٹرننگ آفیسر کو دوبارہ گنتی کرنے اور نتائج سے متعلق خدشات پر مبنی درخواست دائر کر دی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ اُن کا اپنے مخالف اُمیدوار سے 2443ووٹوں کا فرق ہے جبکہ 1900کے لگ بھگ مسترد شدہ ووٹ شامل ہیں ،پولنگ افسران کے مطابق ان میں سے زیادہ تر تعداد تحریک انصاف کے ووٹوں کی ہے درخواست میں کہا گیا ہے کہ بعض پولنگ سٹیشنز کے فارم14میں ابہام پایا جاتا ہے جیسا کہ پولنگ سٹیشن نمبر 39کی پریذائڈنگ آفیسر نے دونوں فارم14 پی پی147کے جمع کروا دئیے ہیں اور این اے122کا فارم جمع نہیں کروایا اور نہ ہی آخری وقت تک یہ فارم سامنے آیا، عبدالعلیم خان نے اپنی درخواست میں لکھا ہے کہ این اے122کے ہزاروں ووٹ نادرا کی ملی بھگت سے دوسرے حلقوں میں ٹرانسفر کر دیے گئے اور دوسرے علاقوں سے اُن کی جگہ ووٹ درج کیے گئے اور اُن ٹرانسفر شدہ جعلی ووٹوں کو میرے خلاف استعمال کیا گیا ،عبدالعلیم خان نے استدعا کی ہے کہ دوبارہ گنتی ہونے اور میری درخواست کے مطابق چھان بین ہونے تک حتمی نتیجہ جاری نہ کیا جائے نہ ہی الیکشن کمیشن کو رزلٹ نوٹیفیکیشن کیلئے بھیجا جائے اور میری درخواست منظور کرتے ہوئے تمام ووٹوں کی دوبارہ گنتی کروائی جائے ۔ دوسری جانب ریٹرننگ افسر زاہد اقبال نے یہ کہہ کر درخواست واپس کر دی کہ درخواست تاخیر سے دی گئی ہے ،اب اس پر مزید کارروائی کا اختیار صرف اور صرف الیکشن کمیشن کے پاس ہے۔واضح رہے ریٹرننگ افسر نے بارہ اکتو بر کو ایاز صادق کی کامیابی کا نو ٹی فکیشن جاری کردیا تھا۔

لاہور ( خبر نگار خصوصی) تحر یک انصاف پنجاب کے آرگنائزر چوہدری محمدسرور نے ووٹرز لسٹوں کے کمپوٹرائزڈ ریکارڈ کی فراہمی کیلئے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا جبکہ چوہدری سرور کی نگرانی میں ووٹرزلسٹوں میں بے ضابطگیوں کی تحقیقات کیلئے قائم سیل نے باقاعدہ کام کا آغاز کر دیا ‘تحر یک انصاف چےئر مین سیکرٹر یٹ میں قائم مذکورہ سیل کو پہلے ہی روز 100شکایات موصول ہوگئیں جبکہ چوہدری محمدسرور نے پارٹی عہدیداروں کو بھی ووٹرز لسٹوں کے حوالے سے متاثرہ ووٹرز سے ثبوت جمع کر نے کی ہدایات جاری کر دیں ۔تحر یک انصاف پنجاب کے آرگنائزر چوہدری محمدسرور کی جانب سے لاہور کے قومی اور صوبائی اسمبلی کے ضمنی انتخابات میں ووٹر لسٹوں میں ہزاروں ووٹرز کے نام ختم ہونے یا انکے نام دوسر ے حلقوں میں منتقل ہونے کے انکشافات کے بعد لاہور میں پارٹی کے چےئر مین سیکرٹر یٹ میں باقاعدہ سیل قائم کر دیا ہے جس نے گزشتہ روز سے باقاعدہ کام شروع کر دیا ہے جسکو پہلے روز سوشل میڈیا اور دیگر ذرائع سے 52شکایات موصول ہوئیں ہیں جبکہ دوسری طرف چوہدری محمدسرور نے عام انتخابات2013میں استعمال ہونیوالی ووٹر لسٹوں اور ضمنی انتخابات کیلئے11اکتوبر 2015کو استعمال ہونیوالی ووٹر لسٹوں میں ردوبدل کے حوالے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو ایک خط بھی لکھ دیا ہے جس میں الیکشن کمیشن سے مذکورہ ووٹر ز لسٹوں کا کمپوٹرائزڈ ریکار ڈبھی مانگا گیا ہے اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے آرگنائزر پنجاب تحر یک انصاف چوہدری محمدسرور نے کہا کہ ہم ووٹر زلسٹوں کے معاملے کو ہر صورت منطقی انجام تک پہنچائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ تحر یک انصاف ملک میں دھاندلی کے خلاف جدوجہد سیاسی مقاصد نہیں ملک میں جمہو ریت کی مضبوطی اور عوامی ووٹ کے تقد س کی حفاظت کیلئے کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک ملک میں دھاندلی کا خاتمہ نہیں ہو تا اس وقت تک ملک میں حقیقی جمہو ریت کا قیام ممکن نہیں ہو سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ ووٹر لسٹوں میں ہونیوالی بے ضابطگیوں کے حوالے سے ہمیں جتنی تیزی کے ساتھ ثبوت موصول ہو رہے ہیں اس سے صاف ظاہر ہو تاہے کہ ضمنی انتخابات میں باقاعدہ منصوبہ بندی کے ساتھ ہیر پھر کی گئی ہے اور جب ہمارے خلاف مکمل ثبوت آجائیں گے تو الیکشن کمیشن کے خلاف احتجاج سمیت دیگر آپشزکے بارے میں حتمی فیصلہ کیا جا ئیگا اور جب تک دھاندلی کر نیوالوں کو سزانہیں ملے گی تحر یک انصاف اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھے گی ۔

مزید : صفحہ اول


loading...