فیصل آباد، لیگی دھٹروں میں اختلافات، تیز رکن اسمبلی کی گرفتاری کیلئے چھاپوں پر رانا ثناء اللہ گروپ سیخ پا

فیصل آباد، لیگی دھٹروں میں اختلافات، تیز رکن اسمبلی کی گرفتاری کیلئے چھاپوں ...

فیصل آباد(بیورورپورٹ)ن لیگی ایم پی اے ملک نواز سمیت رشتہ داروں اور کارکنوں کے خلاف تھانہ غلام محمد آباد میں مقدمہ درج ہونے اور گرفتاری کے لئے پولیس کے چھاپوں پر فیصل آباد کے متعدداراکین اسمبلی اور سٹی تنظیم کے رہنما ؤں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے سی پی او فیصل آباد کو دو روز میں مقدمہ خارج کرنے‘غیر جانبدار رہنے کا الٹی میٹم دے دیا ہے اور یہ دھمکی دے دی ہے کہ مقدمہ کا اخراج نہ ہونے پر ہزاروں کارکنوں سمیت سی پی او آفس کا گھیراؤ کیا جائے گا۔ صوبائی اسمبلی ملک نواز‘ فقیر حسین ڈوگر‘ شیخ اعجاز‘ حاجی خالد سعید‘ میاں عبدالمنان‘ ایم این اے ن لیگ کے جنرل سیکرٹری میاں قاسم فاروق‘سیکرٹری اطلاعات میاں اجمل‘ جنرل سیکرٹری یوتھ ونگ مسلم لیگ ن شاہد محمود بیگ اور پاور لومز سیکٹر کے نمائندے میاں وحید خالق رامے بھی موجود تھے‘ پریس کانفرنس میں چیئرمین ایف ڈی اے شیخ محمد اعجاز ایم پی اے نے الزام عائد کیا کہ گذشتہ رات ایم پی اے ملک نواز کے خلاف وزیر مملکت پانی و بجلی عابد شیر علی‘ایم پی اے طاہر جمیل‘ سابق ایم پی اے خواجہ اسلام‘ تحریک انصاف کے سٹی آرگنائزر ڈاکٹر اسد معظم‘ سابق ایم پی اے ملک محمد دین‘ تحریک انصاف کے ایم پی اے شیخ خرم اور ٹکٹ ہولڈر بریگیڈیئر امتیاز کاہلوں کی ایماء پر غلام محمد آباد پولیس نے بے بنیاد مقدمہ درج کیا گیا اور سی پی او فیصل آباد نے ایک نئی روایت قائم کرتے ہوئے جانبدارنہ کردار ادا کیا رکن قومی اسمبلی میاں عبدالمنان نے سخت زبان استعمال کرتے ہوئے کہا کہ ن لیگ ایک پارٹی ہے جبکہ دوسری طرف بالٹی ہے انہوں نے غلط نشان لیا ہے اور جس نے پارٹی چھوڑنا ہوتی ہے وہ اس طرح کی حرکتیں شروع کر دیتا ہے جس طرح وزیر مملکت عابد شیر علی کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ان کے بھائی عامر شیر علی کو کو کبھی بھی میئر بننے نہیں دیں گے اور نہ ہی کبھی یہ ہو سکتا ہے کہ ہر بار کرپٹ لوگوں کو اقتدار دے دیں اس سلسلہ میں مسلم لیگ کے قائد وزیر اعظم میاں نواز شریف سے تین بار ملاقات کی اور اس سلسلہ میں بات بھی ہو چکی ہے۔ میئر گروپ کے احتساب کیلئے پارٹی قیادت کو آگاہ کر دیا اور وہ ضرور اس پر کارروائی کریں گے۔ میاں قاسم فاروق نے کہا کہ میئر گروپ ہر جگہ اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے ان کی ذاتی یونین کونسل میں ان کے ہی مدمقابل حقیقی چچا کو مخالف امیدوار کے طور پر کھڑا کر دیا ہے جو آئے دن ان کے گھروں کے باہر ہوائی فائرنگ کر کے ہراساں کر رہے ہیں جن کے خلاف ایک مقدمہ پہلے بھی درج ہو چکا ہے اگر ان کے پیچھے دیکھیں تو ن لیگ کے ہی ایم این اے ڈاکٹر نثار جٹ کھڑے ہیں جو ان کوسپورٹ کر رہے ہیں اور این اے 80کی یونین کونسلز میں شیر علی جا کر خود جلسہ منعقد کر رہے ہیں اور عوام کو ن لیگ کے حمایت یافتہ امیدواروں کے خلاف ووٹ دینے پر اکسا رہے ہیں ایم پی اے ملک نواز نے کہا کہ ان کے خاندان کا مسلم لیگ ن کے ساتھ 1985سے تعلق ہے، آمریت اور جبر کے باوجود پوری استقامت کے ساتھ پارٹی کے وفادار رہے، انتہا ہونے کے بعد مجبوراً آج پریس کانفرنس کرنی پڑ رہی ہے. سابق بلدیاتی انتخابات میں بھی شیر علی نے میئر شپ کے لئے درجن بھر لاشیں گرا دیں تھیں اور موجودہ بلدیاتی انتخابات کوبھی اسی طرف لیجا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کا ایک ووٹر میرے گھر آیا اور ان کے امیدوار بھائی کی فلیکس لے کر گیا جو اس نے گھر کے باہر لگا لی جس پر ان کے حریف امیدوار جو ووٹرز کے گھر سے تقریبا 10گھروں کی دوری تک رہتا تھا اس نے فلیکس اتارنے کو کہا اور فلیکس نہ اتارنے پر قریب کھڑے خیال کاسترو اور وائس چیئرمین رانا رؤف کے بیٹوں سمیت تقریبا دو درجن افراد آ گئے اور آتے ہی انہوں نے فلیکس اتار کر پھاڑ دی اس کو اور تشدد کر کے زخمی کر دیا جس کے مقدمہ کے اندراج کیلئے تھانہ غلام محمد آباد میں درخواست دی تو اسی شام وزیر مملکت عابد شیر علی ‘ ایم پی اے طاہر جمیل‘ سابق ایم پی اے خواجہ اسلام کی ایماء پر 200/250افراد نے ریلی نکالی اورہوائی فائرنگ کرتے ہوئے ان کے گھر کے پاس آئے فائرنگ کی آواز سن کر میرے گارڈز باہرنکلے توبھگڈر مچ جانے سے ان کی گاڑیاں آپس میں ٹکرا گئیں اسی دوران پراسرار طور پر کار میں بیٹھے تین افراد فائرنگ سے زخمی ہو گئے کار کو کوئی بھی نقصان نہ پہنچا اس دوران واقعہ کی اطلاع ملتے ہی عابد شیر علی‘طاہر جمیل اور خواجہ اسلام جو قریب ہی ایک گھر میں بیٹھے تھے تھانہ غلام محمد آباد پہنچ گئے اور پی ٹی آئی کے لوگوں کے ہمراہ ٹائروں کو آگ لگا کر روڈ بلاک کر دی اور ہسپتال میں ڈاکٹرز کو انڈرپریشر کر کے میڈیکولیگل لے لیا ۔انہوں نے کہا کہ ایس ایچ او غلام محمد آباد نے مقدمہ درج کرنے سے انکار کیا تو اس کو فوری طور پر معطل کروا کر نئے ایس ایچ او کے ذریعے ان کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا. جبکہ مقدمہ درج کرنے سے پہلے ایس ایچ او نے فون کر کے کہا کہ سینکڑوں افراد نے تھانہ کا گھیراؤ کیا ہوا ہے نقص امن کا خطرہ ہے پہلے ان کا مقدمہ درج کر دیتے ہیں بعد میں آپ لوگوں کا مقدمہ بھی درج کر دوں گا. ملک نواز نے کہا کہ نقص امن کے خدشہ کے باعث وہ خاموش ہو گئے اور سی پی او فیصل آباد نے جانبداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا انہوں نے کہا کہ میئر گروپ کو شک ہے کہ اگر انکا بھائی جیت گیا تو کہیں میئر شپ کے لئے آگے نہ آ جائے اس لئے میئر گروپ والوں نے پی ٹی آئی کے ساتھ مل کر یہ سارا چکر چلایا ہوا ہے ملک نواز نے کہا کہ مقدمہ درج ہوتے ہی ان کو پریشر ائز کرنے کیلئے ان کے گھر‘ ان کے بھائی اور ایک عزیز کے گھر پر گرفتاری کیلئے پولیس نے چھاپے مارنے شروع کر دیئے اس دوران ایس پی ملک اویس کو فون کر کے حالات بتائے تو ایس پی نے کہا کہ ہم مجبور ہیں اوپر سے پریشر ہے کوئی کارروائی نہیں کر سکتے.انہوں نے کہا کہ ان کے مخالف امیدوار کے ساتھ ان کے عزیز داری تھی اور وہ گذشتہ 35 برسوں سے ایک ہی علاقہ میں رہ رہے ہیں اور ان کے درمیان کبھی بھی لڑائی نہیں ہوئی ہے اس لڑائی کی سازش کی بو وہ گذشتہ 4دن سے محسوس کر رہے تھے کیونکہ ان دنوں عابد شیر علی کا پی ٹی آئی کے ساتھ گٹھ جوڑ ہوا ہے اوروہ اپنے بھائی کو میئر بنوانے کے لئے پارٹی کے خلاف کام کر رہا ہے انہوں نے کہا کہ ان کو اور ورکر بھائی سمیت کسی بھی عزیز کو کچھ ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری عابد شیر علی پر ہو گی۔

مزید : ملتان صفحہ اول


loading...