ملک بھر میں انجمن ہلال احمر کی سر گرمیوں کو فعال اور تیز رفتار بنایا جائے: صدر ممنون حسین

ملک بھر میں انجمن ہلال احمر کی سر گرمیوں کو فعال اور تیز رفتار بنایا جائے: صدر ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)صدر مملکت ممنون حسین نے ہدایت کی ہے کہ ملک بھر میں انجمن ہلال احمر کی سرگرمیوں کو فعال اور تیز رفتار بنایا جائے اور اس مقصد کے لیے اس کے آئین میں تبدیلی کی ضرورت ہو تو وہ بھی کرلی جائے۔صدر مملکت نے یہ بات انجمن ہلال احمر کے عہدے داروں کے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہی جس نے انجمن کے چیئر مین ڈاکٹر سعید الہی کی قیادت میں ان سے ملاقات کی۔صدر مملکت نے کہا کہ انجمن ہلال احمر کی شاخوں میں ایسے لوگوں کو شامل کیا جانا چاہئے جو خدمت خلق کا ریکارڈ رکھتے ہوں ۔ انھوں نے اس امر پر اطمینان کا اظہار کیا کہ انجمن نے ملک بھرمیں کام کرنے والی ایمبولینس سروسزکے عملے کو تربیت دینے کے لیے ایک جامع پرگروام شروع کیا ہے۔ صدر مملکت نے اس موقع پر زندگی کے مختلف شعبوں میں انجمن ہلال احمر کے فعال کی تعریف بھی کی۔دریں اثناء صدرِ مملکت ممنون حسین نے جامعات کو ہدایت کی ہے کہ وہ تحقیق پر خصوصی توجہ دیں کیونکہ گذشتہ کئی دہائیوں کے دوران یہ شعبہ توجہ سے محروم رہاہے۔قوموں کی ترقی کا اہم ذریعہ تحقیق ہے۔صدرِ مملکت نے یہ بات وفاقی یونیورسٹیوں اور انسٹی ٹیوٹس کے سربراہوں کے اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے کہی۔ صدرِ مملکت نے کہا کہ اردو کانفاز بطور دفتری زبان ایک درست فیصلہ ہے۔ ابتدا میں اس سلسلے میں دشواریاں پیش آئیں گی لیکن دنیا میں ان ہی قوموں نے زیادہ ترقی کی جن قوموں نے اپنی زبان کوذریعہ تعلیم بھی بنایا اور سرکاری زبان بھی بنایا۔ اس سلسلے میں یونیورسٹیاں بہتر کردار ادا کرسکتی ہیں۔صدرِ مملکت نے کہا کہ تربیت کے بغیر تعلیم مکمل طورپر سود مند نہیں ہو سکتی اس کے لیے نوجوانوں کواچھا انسان بنانابھی ضروری ہے۔ صدرِ مملکت نے ہدایت کی کہ دیگر عوامل کے علاوہ کھیل بھی اچھا انسان بنانے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ انہوں نے ہائیر ایجوکیشن کمیشن کو ہدایت کی کہ اس مقصد کے لیے کھیلوں کے انٹریونیورسٹی ٹورنامنٹ منعقد کرائے جائیں۔ صدرِ مملکت نے اس امر پر خوشی کا اظہار کیا کہ پاکستان کی یونیورسٹیاں اپنے محدود وسائل کے باوجود بہتر کارکردگی کا مظاہر ہ کر رہی ہیں ۔ اجلاس سے ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر مختار احمداور متعدد وائس چانسلروں نے بھی خطاب کیا۔

مزید : ملتان صفحہ اول


loading...