سمگلر کروڑوں روپے کے نایاب کچھوے سڑک پر چھوڑکر فرار

سمگلر کروڑوں روپے کے نایاب کچھوے سڑک پر چھوڑکر فرار
سمگلر کروڑوں روپے کے نایاب کچھوے سڑک پر چھوڑکر فرار

  


کراچی(ویب ڈیسک) سمگلر مبینہ طور پر اندرون ملک سے کراچی لاکر کروڑوں روپے مالیت کے کچھوے سڑک پر چھوڑ کر فرار ہو گیا۔محکمہ جنگلی حیات کی مشترکہ ٹیم نے نایاب نسل کے 62 کچھوے بچالیے۔25 کچھوے گاڑیوں کے نیچے آنے کے باعث مر گئے۔ شہری اس وقت خوشگوار حیرت میں مبتلا ہو گئے جب انہوں نے سڑک کے بیچ بیچ نایاب نسل کے کچھوﺅں کی بڑی تعداد کو جمع دیکھا جنہیں اطلاع ملنے پر ڈبلیو ڈبلیو ایف کی ٹیم نے ریسکیو کیا۔ دبلیو ڈبلیوایف کے مطابق کو رنگی کازویے سے 62 نایاب کچھوﺅں کو ریکسکیو کیا گیا جبکہ25 کچھوے مردہ حالت میں پائے گئے۔ یہ کچھوے گاڑیو ں کے نیچے آکر ہلاک ہوئے ۔ امکان ظاہر ہوتا ہے کہ ان کچھوﺅں کو مبینہ طور پر سمگل کیا جانا تھا۔ کیونکہ عالمی مارکیٹ میں ان کچھوﺅں کی مالیت لاکھوں میں ہے۔ ڈبلیو ڈبلیوایف کے ماہرین کے مطابق پکڑے جانے والے کچھوے خشکی اور پانی کے ہیں اور ان کا تعلق سنٹرل ایشین کچھوﺅں اور بلیک پونڈ کچھوﺅں کی نسل سے ہے جس سے ظاہر ہوت ہے کہ یہ کچھوئے کراچی کے بجائے کسی دوسرے شہر سے لائے گئے۔ امکان ہے کہ بہت سے کچھوے راہ گیر اور بچے بھی اٹھاکے لے گئے۔ ریسکو کئے گئے کچھوﺅں کو سندھ وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کر دیا گیا جنہیں بعدازاں حب ڈیم میں چھوڑ دیا گیا۔

مزید : کراچی


loading...