کلا س روم میں پیشاب کرنے کی سزا ،چار سالہ طالبہ کا نچلادھڑ جلا دیا گیا

کلا س روم میں پیشاب کرنے کی سزا ،چار سالہ طالبہ کا نچلادھڑ جلا دیا گیا
کلا س روم میں پیشاب کرنے کی سزا ،چار سالہ طالبہ کا نچلادھڑ جلا دیا گیا

  


ایلورو(مانیٹرنگ ڈیسک)آندھرا پردیش کے ایک نجی سکول کے کلاس روم میں پیشاب کرنے کے جرم میں چار سالہ طالبہ کا نچلا دھڑ جلا دیا گیا ۔تفصیلا ت کے مطابق ایلو رو ٹاؤن کے انگلش میڈیم سکول ”ہوپ“میں چار سالہ طالبہ نے کلاس روم میں پیشاب کر دیا جس کے جرم میں کلاس ٹیچر نے اسے عین دوپہر کے وقت کھیل کے میدان میں لوہے کی گرم سلائیڈپر بیٹھنے کی سزا دیدی جس کی وجہ سے معصوم بچی کے نچلے دھڑ کے ”نازک اعضاء“بری طرح جھلس گئے ۔ستم پر ستم یہ ہو اکہ جب چار سالہ بچی کے والدین نے سکول پرنسپل دھن لکشمی کو واقعہ سے آگاہ کیا گیا تو انہوں نے ٹیچر کیخلاف کارروائی سے انکار کردیاجس کے بعد والدین نے پولیس میں شکایت کردی پولیس نے والدین کی درخواست پرسکول ٹیچر ،پرنسپل اورآیا کیخلاف مقدمہ درج کرلیا ۔واقعہ شہرمیں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گیا جس کے بعد مقامی کمیونٹی سمیت چائلڈویلفیئر کیلئے کام کرنے والی متعدد تنظیموں کی جانب سے احتجا ج کیا گیا جس میں سکول انتظامیہ کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا۔سٹیٹ چائلڈ رائٹس اتھارٹی نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ڈسٹرکٹ کلکٹر اور سپرنٹنڈنٹ آف پولیس سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔سٹیٹ چائلڈرائٹس اتھارٹی کے ممبر اچوت راؤنے این ڈی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم کوکمرشل سرگرمی بنا دیا گیا ہے یہاں تک کے ٹیچر مطلوبہ تعلیمی قابلیت بھی نہیں رکھتے اور انہیں بچوں کو پڑھانے پر لگایاہو اہے ،انہوں نے مزیدکہاکہ اگر ایک ٹیچر اس طرح کا ایک چھوٹا سا مسئلہ بھی حل نہیں کر سکتاتو اسے استحقاق حاصل نہیں کہ وہ ایک استاد کی کرسی پر بیٹھے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...