مریم نواز شریف کی وہ درخواست جسے پرویز مشرف نے قبول کرلیا تھا لیکن بعد میں پچھتانا پڑا

مریم نواز شریف کی وہ درخواست جسے پرویز مشرف نے قبول کرلیا تھا لیکن بعد میں ...
مریم نواز شریف کی وہ درخواست جسے پرویز مشرف نے قبول کرلیا تھا لیکن بعد میں پچھتانا پڑا

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ ن کی مرکزی قیادت کی جلاوطنی کے دنوں میں اس وقت کے آمر پرویزمشرف نے میاں نوازشریف کی خوشدامن کی وفات پر میاں برادران کی شرکت کی مریم نواز کی صدررفیق تارڑکے ذریعے کی گئی درخواست قبول کرلی لیکن بعد میں اُنہیں پچھتانا پڑاجس کا انکشاف خود سابق صدر رفیق تارڑ نے کی ۔

دنیانیوز کیلئے سینئر صحافی اورروزنامہ پاکستان کے چیف ایڈیٹر مجیب الرحمان شامی کو دیئے گئے انٹرویو میں سابق صدر رفیق تارڈ نے بتایاکہ ”ایک مرتبہ مریم نوازشریف کا فون آیا اور کہنے لگیں کہ انکل میری نانی اماں فوت ہوگئی ہیں ، ابواورچچا کو جنازے میں شامل ہونے کی اجازت ہونی چاہیے جس پر میں نے تعزیت کی اور پرویزمشرف سے بات کرکے دوبارہ بتانے کی یقین دہانی کرائی ۔پھرمشرف سے ٹیلی فونک رابطہ ہواتواُن کاموقف تھاکہ وہ آئیں گے تومیرے خلاف تقریریں کریں گے ،یہ ہوگا، وہ ہوگاوغیرہ وغیرہ لیکن میں نے دوبارہ درخواست کی کہ کچھ خیال کریں ، وہ جنازے میں آناچاہتے ہیں اور یہ انسانی حقوق کا بھی معاملہ ہے ‘۔

رفیق تارڑ نے بتایاکہ ان کے دلائل کے بعد پرویز مشرف نے کہاکہ ” 15,20منٹ میں دوبارہ آپ سے بات کرتاہوں ، میرے خیال میں اس وقت ساتھی جرنیلوں سے مشورہ کرناچاہیے ‘ ۔ تھوڑی دیربعد پرویزمشرف کا فون آگیا اوراُنہوں نے شریف برادران کے آنے کی اجازت دیدی لیکن واضح کیاکہ وہاں کوئی تقریر نہیں ہونی چاہیے تورفیق تارڑ نے شکریہ اداکرتے ہوئے کہاکہ اورکوئی بات نہیں اور پھر مریم نوازکو فون کرکے بتادیاکہ اجازت مل گئی ہے ۔

رفیق تارڑ نے بتایاکہ ’اجازت دینے کے تین چاردن بعد مشرف آئے اور کہنے لگے کہ وہاں تو بہت تقریریں ہوئی ہیں ، مجھے بہت رگڑادیاگیاہے جس کے جواب میں رفیق تارڑ نے کہاکہ جنرل صاحب کبھی آپ نے یہ بھی سوچاکہ وہ کہاں تھے اور آپ نے کیا رگڑا دیاتو کہنے لگے کہ یہ بات تو ٹھیک ہے ۔

اُنہوں نے بتایاکہ عرفان صدیقی پریس سیکریٹری تھے اور نوازشریف یہ بھی سوچ رہے تھے کہ بھٹوکا منظردوہرایاجائے اوران الزامات میںان دنوں ضمانت بھی نہیں ہوسکتی تھی ۔ ایک سوال کے جواب میں اُنہوں نے بتایاکہ صدر کو ایوان صدر سے نکالنے کیلئے پی سی اولایاگیا اور جب ججوں کے پی سی او کے بارے میں علم ہواتومخالفت کی کہ پہلے ہی ملک میں حالات اچھے نہیں تو مشرف نے بتایاکہ اُنہیں اطلاع ملی ہے کہ خلیل الرحمان خان کو سعودی عرب سے کروڑوں ریال ملے جو ججوں میں تقسیم کریں جس پر رفیق تارڑ نے اُنہیں کہاکہ وہ کون معزز ہستی ہے جس نے آپ کو بتائی ہے ۔مشرف نے پھر پوچھاکہ کیا آپ کو بھی پتہ ہے تو میں نے کہاکہ نہیں ، یہ محض افواہیں ہیں ۔

مزید : قومی


loading...