تحقیقات کر کے دھاندلی کے ثبوت الیکشن کمیشن کو دیں گے ،ہار ماننے والا نہیں :عمران خان

تحقیقات کر کے دھاندلی کے ثبوت الیکشن کمیشن کو دیں گے ،ہار ماننے والا نہیں ...
تحقیقات کر کے دھاندلی کے ثبوت الیکشن کمیشن کو دیں گے ،ہار ماننے والا نہیں :عمران خان

  


لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان تحریک انصا ف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی کی ایک سیٹ سے کیا فرق پڑتا ہے اور پی ٹی آئی نے حلقہ ایک سو بائیس سے جیت کر کونسا معرکہ مار لینا تھا لیکن ہمارا اصل مقصد انصاف کا نظام لانا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ حلقہ ایک سو بائیس میں 2013کے عام انتخابات میں دھاندلی ہوئی تھی جس کے تحت 53ہزار جعلی ووٹ ڈالے گئے ۔یہ کیسے ممکن ہے کہ پارٹی کا چیئر مین اس حلقے سے ساڑھے آٹھ ہزار ووٹوں سے جبکہ عبد العلیم خان ڈھائی ہزار ووٹوں سے ہارے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ عام انتخاب میں اس حلقے میں دھاندلی ہوئی تھی ۔ان کا کہنا تھا کہ عبدالعلیم خان خان کا مقابلہ سرکاری مشینری سے تھا ،وزیر ریلوے حلقے میں موجو د ریلوے کالونی میں کیا کر رہے تھے اور بے نظیر انکم سپورٹ کی چیئر مین ماروی میمن کی موجودگی اس بات کا ثبوت ہے۔وزیر اعظم نے بھی آخری روز پریس کانفرنس کی جو کے ضابطہ اخلاق کے خلاف ہے ۔انہوں نے کہا کہ میں پارٹی کا چیئر مین ہوں اور پارٹی کا منشور بیان کر نے کے لیے ہر فورم پر بات کر سکتا ہوں ۔اس حلقے میں دھاندلی کی تحقیقات کر رہے ہیں جس کے بعد ثبوت الیکشن کمیشن کو پیش کیے جائیں گے ۔لاہور کے حلقہ ایک سوبائیس میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 2013میں 53ہزار جعلی ووٹ ڈالنے والوں کے خلاف کو ئی کاروائی نہیں کی جب تک ایسے لوگوں کے خلاف کاروائی نہیں ہوگی تو کرپٹ لوگ اسمبلیوں میں آتے رہے ہیں ۔جو لوگ کرپشن کر کے اسمبلیوں میں آتے ہیں وہ کرپشن کو کیسے روک سکتے ہیں ۔

مزید : لاہور /اہم خبریں


loading...