عجیب لڑکی ،زیادتی کا نشانہ بنانے والے کے ساتھ ہی باقی رات گزاری اور پھر جنگلوں اورصحراﺅں میں نکل گئی

عجیب لڑکی ،زیادتی کا نشانہ بنانے والے کے ساتھ ہی باقی رات گزاری اور پھر ...
عجیب لڑکی ،زیادتی کا نشانہ بنانے والے کے ساتھ ہی باقی رات گزاری اور پھر جنگلوں اورصحراﺅں میں نکل گئی

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)وہ لڑکی کس ذہنی حالت کا شکارہوگی جو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے کو اپنے ساتھ رات گذارنے کے لئے کہہ دے اور اس کے بعد صحراﺅں اور پہاڑوں کی خاک چھاننے لگے۔ایسا ہواہے میکسیکومیں اوریہ سب کرنے والی پچیس سالہ اسپن ماٹس نامی لڑکی ہے،جسے کالج میں داخلے کے بعد دوسری رات کو ہی جنسی درندگی کاسامنا کرنا پڑا۔دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ ماٹس نے یہ ساری کہانی معروف امریکی اخبارنیویارک ٹائم میں چھپنے والے اپنے آرٹیکل میں بیان کردی ہے۔

ماٹس کا کہنا ہے کہ اس نے اپنے ساتھ ریپ کرنے والے کو رات گذارنے کی پیشکش اس لئے کی کہ وہ خود کو سمجھانا چاہتی تھی کہ اس کے ساتھ جو کچھ پیش آیا ایسا وہ خود بھی چاہتی تھی تاکہ خود کو سمجھا سکے کہ سب اچھا ہے۔ وہ ایسے کربناک لمحوں کو اپنی یادوں سے کھرچ دینا چاہتی تھی کیونکہ ایسے کسی جسمانی اورذہنی صدمے سے دوچارہونے کے بعد ہرکوئی چاہتا ہے کہ اسے بھلا دے مگرعملاًایسا ممکن نہیں۔کچھ ہفتوں بعد ماٹس نے اپنے ساتھ پیش آنے والے واقعہ کی رپورٹ کالج کی جنسی حملوں کے تدارک کے لئے بنائی گئی کمیٹی کو کردی مگراس کمیٹی میں ہرکوئی اس واقعہ کو رفع دفع کردینا چاہتا تھا۔

اس صورتحال سے ماٹس ایسی پریشان ہوئی کہ اس نے اپنا بوریا بسترلپیٹا اور میکسیکوکی سرحد عبورکرکے شمال میں دوہزارچھ سو میل سے زائد صحرائی اورپہاڑی علاقوں سے ہوتی ہوئی پہلے کینیڈا اورپھرامریکا پہنچی۔اس واقعہ پراپنے دوستوں اورقریبی عزیزوں کا ردعمل بھی ماٹس کے وطن چھوڑنے اوردوردراز کے پہاڑی علاقوں کے سفرکا باعث بنا،ہرکوئی چاہتا تھا کہ ماٹس کے ساتھ جو ہوا وہ اسے بھلادے مگراپنے اہل خانہ کے اس ردعمل پرماٹس کافی مایوس ہوئی،اس کی تما م جدوجہد کا مقصد ایک پرسکون گھرکی تلاش تھی۔ماٹس نے اس سارے واقعہ کی یادداشت بھی لکھ دی ۔اس کا کہنا ہے کہ ان سب تلخ یادداشتوں کے لکھنے کا مقصد یہ ہے کہ وہ اس سے ملنے والی رقم سے جنسی زیادتی کا شکا رہونے والوں کی مدد کرنا چاہتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...