آذربائیجان نے کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کردی، پاک فوج کیساتھ مشترکہ مشقوں کا اعلان

آذربائیجان نے کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کردی، پاک فوج کیساتھ مشترکہ ...
آذربائیجان نے کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کردی، پاک فوج کیساتھ مشترکہ مشقوں کا اعلان

  

باکو (مانیٹرنگ ڈیسک ) آذربائیجان کے صدر الہام علیوف نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے موقف کی حمایت کرتے ہیں ، پاکستان دفاعی شعبے میں بہت ترقی کر چکا ہے اور آذربائیجان کو عسکری تربیت فراہم کر سکتا ہے ۔پاک فوج کیساتھ تعلقات کو مزید فروغ دیں گے ۔

وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس کے دوران پاک فوج کیساتھ مشترکہ فوجی مشقیں کرنے کا اعلان کر تے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان آذربائیجان کو تسلیم کرنے والے پہلے ممالک میں شامل ہے تاہم آذربائیجان پاکستان کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون جاری رکھے گا اور پاک فوج کیساتھ بھی تعاون کریں گے ۔پاکستان سے دفاعی آلات خریدنا چاہتے ہیں ۔

آذربائیجان کے صدر نے آرمینیا کو تسلیم نہ کرنے پر پاکستان کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہمار ا قریبی دوست اور اہم اتحادی ہے تاہم مسئلہ کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل نہ ہونا افسوس ناک ہے اور جسے یو این او کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہئےے ۔

الہام علیوف کا مزید کہنا تھا کہ عالمی فورمز پر پاکستان اور آذربائیجان ایک دوسرے کی حمایت کرتے ہیں اور آج وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ مذاکرات میں دفاعی شعبے میں تعاون پر بات ہوئی ہے تاہم پاکستان کے ساتھ سیاسی تعلقات اور رابطوں کو فروغ دیں گے ۔”دعوت قبول کرنے پر وزیر اعظم نواز شریف کے شکر گزار ہیں “۔

نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے پاکستان کی تعریف اور حمایت کرنے پر آذربائیجان کے صدر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ آذر بائیجان پاکستانیوں کے لیے دوسرے گھر جیسا ہے اور معاشی ترقی کی منزلیں تیزی سے طے کر رہا ہے ۔”آذربائیجان کی معاشی ترقی اور استحکام دیکھ کر خوشی ہوئی “۔دونوں ممالک کی دوستی قابل رشک ہے ۔ آذر بائیجان کے ساتھ تجار ت کو مزید فروغ دیں گے ۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ دونوں ممالک خطے میں امن چاہتے ہیں اور آذربائیجان کی جانب سے کشمیر کی حمایت قابل تعریف ہے ۔مثبت تعلقات پر خوشی ہے ۔ملتان سرائے دونوں مماالک کے تاریخی تعلقات کی عکاس ہے ۔علاوقے کے متنازع مسائل مزاکرات سے حل ہونے چاہئیںتاہم امن کی خواہش کو کمزور ی نہ سمجھا جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اور آذربائیجان امن کیلئے کام کرتے رہیں گے ، آذر بائیجان کی سیاسی ، ثقافتی اور معاشی ترقی قابل تعریف ہے ، دونوں ممالک کے لوگ ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -