ساہوکا: واردات کے دوران نوجوان قتل‘ ورثا کا لاش سڑک پر رکھ کر مظاہرہ

      ساہوکا: واردات کے دوران نوجوان قتل‘ ورثا کا لاش سڑک پر رکھ کر مظاہرہ

  



ساہوکا (نامہ نگار)نامعلوم افراد نے ڈکیتی کے دوران نوجوان کو قتل کر دیا ورثا نے اہل علاقہ کے ہمراہ لاش اڈا چھٹا میل پر رکھ کر شدید احتجاج کیا ہے پولیس نے مقدمہ درج کر تحقیقات شروع کر دیں۔تفصیل کے مطابق تھانہ فتح شاہ کے نواحی علاقے چک نمبر 469ای بی کا رہائشی نوجوان سجاد ولد محمد(بقیہ نمبر14صفحہ12پر)

حسین جوتوں کی دوکان پر بطور منیجر کام کرتا تھا اس کو بوریوالا سے واپسی پر گھر سے چند ایکٹر کے فاصلہ پر نامعلوم افراد نے روک کر فائرنگ کر کے قتل کر دیا اور موقع سے فرار ہو گئے ورثہ نے لاش سڑک پر رکھ کر ٹائر جلا کر روڈ بلا ک کر دیا جس سے گاڑیوں کی لمبی لائنیں لگ گئی مقامی پولیس کے سب انسپکٹر محمد اشرف مذاکرات کیلئے موقع پر پہنچے تو مشتعل افراد نے حملہ کر دیا اور سب انسپکٹر کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا جس کو زخمی حالت میں ٹی ایچ کیو ہسپتال بوریوالا شفٹ کر دیا گیابعدازاں ڈی ایس پی ٹریفک شہزاد منظور ڈی ایس پی انوسٹی گیشن میڈم روبینہ عباس سرکل کے ایس ایچ اوز انسپکٹر زوالفقارعلی،محمد رزاق جٹ،محمد صدیق،مجاہد بلوچ نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور مظاہرین سے مذاکرات کر کے روڈ کھلوایا اس موقع پر مظاہرین نے کہا کہ اس کیس کی تفتیش سابق ایس ایچ او عبد المجید جٹ کو دی جائے اور ملزمان کو فوری گرفتار کیا جائے آفیسران کی یقین دہانی پر مظاہرین منتشر ہو گئے فتح شاہ پولیس نے مقتول کے بھائی الطاف حسین ولد محمد حسین کی مدعیت میں نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے جبکہ سب انسپکٹر عبد المجید جٹ نے مقتول کے زیر استعمال موبائل فونز قبضہ میں لیکر تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے قائم مقام ڈی ایس پی بوریوالا نے بتایا کہ ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا

مظاہرہ

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...