بندوبستی علاقوں میں قائم دفاتر اپنے اضلاع کو منتقل کئے جائیں‘ تاج وزیر

بندوبستی علاقوں میں قائم دفاتر اپنے اضلاع کو منتقل کئے جائیں‘ تاج وزیر

  



پشاور (سٹی رپورٹر)پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن کے مرکزی رہنماء تاج وزیر نے مطالبہ کیا ہے کہ قبائلی اضلاع کیلئے بندوبستی علاقوں میں قائم تمام دفاتر اپنے اپنے قبائلی ضلع کو منتقل کئے جائیں تاکہ لوگوں کی مشکلات میں کمی آسکے۔ ایک بیان میں تاج وزیر نے کہاکہ جنوبی وزیرستان کیلئے جوڈیشل کمپلیکس کا افتتاح 200کلومیٹر دور ضلع ٹانک میں کرنا افسوسناک امر ہے، سات لاکھ آبادی عدالتی کارروائی کیلئے دور دراز علاقہ ٹانک تک کا سفر طے کرے گی جو کسی بھی صورت قبول نہیں، انضمام کے بعد پاکستان کے آئین کی تمام شقوں کی توسیع نئے اضلاع تک ہوچکی ہیں لیکن بدقسمتی سے موجودہ وفاقی و صوبائی حکومتیں اصلاحات کے نفاذ میں سنجیدہ نہیں، اے این پی سمیت تمام جمہوریت پسند قوتوں نے فاٹا کو اسلئے خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کی کوششیں کیں اور کامیابی کے ساتھ یہ عمل مکمل کیا کہ قبائلی عوام کو اپنے ہی علاقوں میں سہولیات کی فراہمی ہولیکن اب بھی یہ عمل نامکمل ہے کیونکہ ان علاقوں کے اکثر انتظامی دفاتر بندوبستی علاقوں میں تاحال قائم ہے۔ انہوں نے کہاکہ حال ہی میں جنوبی وزیر ستان کا دفتر ٹانک میں قائم کیا گیا جو سمجھ سے بالاتر ہے، کیونکہ جنوبی وزیرستان کے لوگ اپنے مسائل حل کرنے کیلئے ٹانک کو نہیں آسکتے ہیں اور دونوں ایک دوسرے سے کافی دور علاقے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ قبائلی اضلاع کیلئے بندوبستی علاقوں میں قائم نادرا، تعلیم، صحت، ڈومیسائل اور دیگر تمام دفاترمتعلقہ قبائلی ضلع کو فوری منتقل کئے جائیں تاکہ لوگوں کو اپنے امور نمٹانے میں آسانی آسکے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...