پی آئی اے کی فنانس رپورٹ بنانا آسان نہیں، سابق ایم ڈی

 پی آئی اے کی فنانس رپورٹ بنانا آسان نہیں، سابق ایم ڈی

  



کراچی(این این آئی)سابق ایم ڈی پی آئی اے محمد اعجاز ہارون نے کہا ہے کہ پی آئی اے اچھی سروس فراہم کریگی تو لوگ سفر کرنا پسند کریں گے ورنہ خسارہ بڑھتا ہی جائیگا۔ایک انٹرویومیں سابق ایم ڈی پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن  محمد اعجاز ہارون نے کہا کہ پی آئی اے میں ڈسپلن کا سب سے زیادہ مسئلہ تھا جو موجودہ انتظامیہ نے حل کر دیا ہے جو ان کی بڑی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا کہ پی آئی اے کی فنانس رپورٹ بنانا آسان نہیں ہے اس میں بہت سے مسائل موجود ہیں جس کے لیے کوئی اچھا سسٹم لانے کی ضرورت ہے۔محمد اعجاز ہارون نے کہا کہ پی آئی اے کے موجودہ ملازمین اب 14 ہزار کے قریب ہیں جو اتنے زیادہ نہیں ہیں جبکہ ملازمین کی تنخواہوں کا کوئی مسئلہ نہیں ہے لیکن پی آئی اے کا ریونیو کم ہو گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ انتظامیہ کو ریونیو بڑھانے کے طریقہ کار سوچنے چاہئیں اور جدید طریقے کے مطابق چلنا چاہیے۔ پی آئی اے کے جہاز کم ہو گئے اور مسافروں میں بھی بہت زیادہ کمی آئی ہے۔سابق ایم ڈی پی آئی اے نے کہا کہ امریٹس کی کراچی سے روزانہ 4 سے 6 پروازیں کامیابی سے چل رہی ہیں تاہم پی آئی اے کو لوگ پوچھ ہی نہیں رہے۔ پی آئی اے اچھی سروس فراہم کرے گی تو لوگ آپ کی طرف آئیں گے۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کو پی آئی اے کا حب بنانا اچھا فیصلہ ہے اور پی آئی اے انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ دیگر ممالک کے دارالحکومت کے علاوہ دیگر شہروں کے لیے بھی اپنی سروسز کا آغاز کریں جو ان کے لیے فائدہ مند ثابت ہو گا۔

پی آئی اے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر