پاکستان کی شدت پسندی کو کچلنے کی کوششیں قابل تعریف ہیں : امریکہ 

       پاکستان کی شدت پسندی کو کچلنے کی کوششیں قابل تعریف ہیں : امریکہ 

  



 واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) امریکہ نے پاکستان کی حکومت اور فوج کی طرف سے شدت پسندی کو کچلنے کی کوششوں کی تعریف کی ہے۔ تاہم اس کے ساتھ ساتھ افغان سرحد پر دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں کو تیز کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا ہے۔ امریکہ کی قائم مقام نائب وزیر خارجہ اور جنوبی اور وسط ایشیاءکے بیوریو کی سربراہ نے یہ تبصرہ اتوار کی صبح اپنے تازہ ٹویٹر پیغام میں کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان نے حال ہی میں لشکر طیبہ کے چار لیڈروں کو گرفتار کیا ہے جس کا امریکہ خیرمقدم کرتا ہے اور ان لیڈروں اور لشکر طیبہ کے سربراہ حافظ سعید کو خوف ناک حملوں پر پھانسی کا سامنا کرتا ہوا دیکھنا چاہتا ہے۔ مس ویلز نے اپنے پیغام میں مزید لکھا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے تمام انتہا پسند گروہوں کے خلاف کارروائی کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے اور خود پاکستان کے اپنے مستقبل کیلئے ضروری ہے کہ وہ ان دہشت گردوں کو اپنی سرزمین پر متحرک ہونے سے روکے۔ امریکی میڈیا نے یہ پیغام نشر کرتے ہوئے بتایا ہے کہ لشکر طیبہ کے سربراہ حافظ سعید کو ایسے ہی الزامات پر گرفتار کیا گیا تھا جو جولائی سے جوڈیشل ریمانڈ پر ہے جس کا صدر ٹرمپ نے خیرمقدم کیا تھا۔ صدر ٹرمپ بھی اس بات کے خواہش مند ہیں کہ پاکستان دہشت گردی پر کریک ڈاﺅن میں اضافہ کرے۔ یہ چار لیڈروں کی گرفتاری ایسے وقت پر عمل میں آئی ہے جب آئندہ ہفتے ایف اے ٹی ایف کا اجلاس ہونے جا رہا ہے جس میں دہشت گردوں کی فنانسنگ اور منی لانڈرنگ کو کنٹرول کرنے میں ترقی کا جائزہ لیا جائے گا۔ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس(ایف اے ٹی ایف) ایک عالمی واچ ڈاگ ہے جس نے اس شعبے میں پاکستان کی مبینہ کم کارکردگی کی بناءپر اسے گرے لسٹ میں ڈال رکھا ہے۔ 

ایلس ویلز

مزید : صفحہ اول