سعودی عرب کی سب سے بڑی کمپنی سے غیر ملکی ملازمین کو دھڑا دھڑ فارغ کرنے کا فیصلہ

سعودی عرب کی سب سے بڑی کمپنی سے غیر ملکی ملازمین کو دھڑا دھڑ فارغ کرنے کا ...
سعودی عرب کی سب سے بڑی کمپنی سے غیر ملکی ملازمین کو دھڑا دھڑ فارغ کرنے کا فیصلہ

  



ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی حکومت اب تک سعودائزیشن پروگرام کے تحت بے شمار سیکٹرز میں غیرملکیوں کے نوکری کرنے پر پابندی لگا چکی ہے اور اب ملک کی سب سے بڑی کمپنی سے بھی غیرملکیوں کو نکالنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ سعودی گزٹ کے مطابق یہ سعودی عرب کی تیل کمپنی آرامکو ہے جو دنیا کی سب سے بڑی تیل کمپنی ہے۔ توانائی کے سیکٹر میں بھی غیرملکیوں کے نوکری کرنے پر پابندی کے فیصلے کے تحت آرامکو سے غیرملکیوں کو نکالا جائے گا اور پروگرام کے مطابق 2020ءکے اختتام تک آرامکو میں کام کرنے والے 90فیصد غیرملکی نکال دیئے جائیں گے۔

رپورٹ کے مطابق تین روزہ سعودی لاجسٹکس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آرامکوکے شعبہ پروکیورمنٹ اینڈ سپلائی چین مینجمنٹ کے نائب صدر محمد الشیمری کا کہناتھا کہ ”توانائی کے سیکٹر میں بھی زیادہ سے زیادہ سعودی شہریوں کو ملازمتیں دینے سے ایک طرف ملک میں بیروگاری کا خاتمہ ہو گا اور دوسری طرف ملک کے جی ڈی پی میں اضافہ ہو گا۔“ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ”آرامکو اس وقت ’شاہ سلمان انرجی سٹی‘کے قیام پر کام کر رہی ہے جو 50مربع کلومیٹر رقبے ر بنایا جا رہا ہے۔ یہ منصوبہ مکمل ہونے کے بعد جی ڈی پی میں سالانہ 22ارب ڈالر کا اضافہ کرے گا۔“

مزید : عرب دنیا