”ہم لنڈے کے کپڑے پہن رہے ہیں“، حسن نثار پارلیمنٹ کے سوال پر برس پڑے

”ہم لنڈے کے کپڑے پہن رہے ہیں“، حسن نثار پارلیمنٹ کے سوال پر برس پڑے
”ہم لنڈے کے کپڑے پہن رہے ہیں“، حسن نثار پارلیمنٹ کے سوال پر برس پڑے

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کاحسن نثار نے کہاہے کہ ہم لنڈے کے کپڑے پہن رہے ہیں، کہتے ہیں یہ پارلیمنٹ ہے ، یہ جمہوری حجر اسود ہے ، کوئی خدا کاخوف کرو، وہ بندہ کہتاہے کہ میں ڈٹا ہوا ہوں ، ڈٹے ہوئے تو قائمخانی بھی ہیں۔

جیونیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“میں گفتگو کرتے ہوئے حسن نثار نے کہا کہ پارلیمنٹ پارلیمنٹرینز پر مشتمل ایک ادارہ ہوتاہے لیکن ہم ایسے ہی ان کو رہنما اور سیاسی لیڈر کہتے ہیں ، یہ چپڑ قناتی سے بندے ہوتے ہیں ۔ یہ قبائلی جتھے ہیں جن کے اپنے اپنے مفادات ہیں۔

حسن نثار کا کہنا تھا کہ ہم لنڈے کے کپڑے پہن رہے ہیں، کہتے ہیں یہ پارلیمنٹ ہے ، یہ جمہوری حجر اسود ہے ، کوئی خدا کاخوف کرو، وہ بندہ کہتاہے کہ میں ڈٹا ہوا ہوں ، ڈٹے ہوئے تو قائمخانی بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ خواب ہے ، ڈٹے رہو، جیسے کچھ ہوجائے گا ، ذوالفقار علی بھٹو چیمپیئن سمجھے جاتے تھے لیکن بندے بدمعاشی کرکے پارلیمنٹ سے باہر پھینکوا دیے تھے اور کہتے ہیں کہ یہ پارلیمنٹ ہے ۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد