ہائیکورٹ نے سزائے موت کے 2قیدیوں کو12سال بعد بری کردیا

 ہائیکورٹ نے سزائے موت کے 2قیدیوں کو12سال بعد بری کردیا

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے دہرے قتل کے جرم میں سزائے موت کے 2قیدیوں کو12سال بعد بری کردیا،مسٹرجسٹس صداقت علی خان اور مسٹرجسٹس شہرام سرور چودھری پرمشتمل ڈویژن بنچ نے ٹرائل کورٹ سے سزائے موت کی سزا پانے والے محمد رمضان اور عمر قید کی سزا پانیوالے ملزم محمد عمران کو بری کرنے کاحکم دیاہے،دوران سماعت ایڈیشنل پراسیکیوٹر  نے ملزموں کی بریت اپیلوں کی مخالفت کی،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو ملزموں کے وکیل نے موقف اختیارکیا کہ ٹرائل کورٹ نے اس مقدمہ میں شریک ملزم ناصر سمیت دیگرکو بری کردیاگیا، ملزم محمدرمضان کو سزائے موت جبکہ دوسرے ملزم عمران کوعمر قید کی سزائی گئی،ملزم محمد رمضان قتل کے مقدمہ میں کئی سال اشتہاری رہا،وہ 2015 ء میں گرفتار ہوا،گواہان کے بیانات میں تضاد ہے،ملزمان کی موقع پر موجودگی ثابت نہیں ہوتی، ناقص گواہوں کی بناپر ملزمان کو قید میں نہیں رکھا جاسکتا، عدالت سے استدعاہے کہ ملزموں کو بری کرنے کاحکم دیا جا ئے، فاضل بنچ نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد ٹرائل کورٹ سے ملزموں کوملنی والی سزا ئیں کالعدم قراردیتے ہوئے انہیں بری کرنے کاحکم دے دیا۔

ملزم بری

مزید :

صفحہ آخر -