باڑہ‘ محکمہ تعلیم کی تحصیل کیساتھ ناانصافی عروج پر 

باڑہ‘ محکمہ تعلیم کی تحصیل کیساتھ ناانصافی عروج پر 

  

باڑہ (نمائندہ پاکستان)باڑہ تحصیل کے ساتھ محکمہ تعلیم ضلع خیبر کی ناانصافیاں عروج پر ہے سائنس کا سامان صرف جمرود اور لنڈی کوتل کے سکولوں میں تقسیم کیا گیا جبکہ باڑہ مسمار سکول پہلے تو تعمیر کے منتظر ہیں اب رہی کسر محکمہ تعلیم ضلع خیبر پوری کررہی ہے باڑہ تحصیل کے طالب علموں کو تعلیم سے دور رکھنا چاہتے ہے جمرود لنڈی کوتل کے سکولوں کے سالانہ پی ٹی سی فنڈ بھی ہے لیکن پھر بھی نوازشات کا سلسلہ جاری ہے۔معلوم نہیں کہ کس میرٹ کی بنیاد پر سکولوں کو سائنس سامان حوالہ کیا ہے۔ میرے خیال میں باڑہ کے ہاء سکول شلوبر، ہاء سکول حصارہ، ہاء سکول گل ضمیر، ہاء سکول عالم گودر اور ہاء سکول اخون تالاب کو سائنس کا سامان دینا چاہیے تھا کیونکہ خیبر کے دوسرے سکولوں میں سائنس سامان اور دوسرے تمام سہولیات موجود ہوتے ہیں اور PTC فنڈ بھی استعمال کرتے ہیں جبکہ ٹینٹ سکولوں کے طلباء اور اساتذہ کے لئے بارش اور دھوپ سے بچنے کے لئے سایہ اور ضرورت پورا کرنے لئے پانی اور واش روم تک نہیں ساتھ ساتھ PTC فنڈ بھی نہیں دیا جاتا اور معلوم نہیں کہ ان سکولوں کو آئیندہ دس سال میں بھی تعمیر شدہ بیلڈینگ مل جائیگا کیونکہ مذکورہ سکولوں سمیت درجنوں سکولوں کے بدقسمت بچے عرصہ دس سال سے گرمی، سردی اور بارش میں کھلے آسمان تلے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ حکام بالا کے آنکھیں کھلنے اور خیبر کے دوسرے سکولوں پرنسپلز/ہیڈ ماسٹرز صاحبان کو درد محسوس کرنے کی اللہ تعالیٰ سے دعا مانگتے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -