خیبر تحصیل باڑہ میں ڈومیسائل بنانا جوئے شیر لانے کے برابر 

خیبر تحصیل باڑہ میں ڈومیسائل بنانا جوئے شیر لانے کے برابر 

  

باڑہ (نمائندہ پاکستان)ضلع خیبر تحصیل باڑہ میں ڈومیسائل بنانا جوئے شیر لانے کے برابر ہے صوبائی حکومت کی واضح احکامات کے باوجود باڑہ کے شہری  ڈومیسائل بنانے کے لئے خوار وذلیل ہورہے ہے۔ ایک ڈومیسائل  بنانے والے سائل نے کہا کہ میں نے ڈومیسائل فارم جمع کیا ہے  جو تقریبا ایک مہینہ مجھے اس کے لئے اذیت میں مبتلا کیاگیا۔ انہوں نے کہا کہ میں ہر روز ڈومیسائل کے لئے باڑہ تحصیل آتا تھا لیکن خالی باتوں پر ٹرخا کر  واپس کیاجاتا تھا جبکہ کچھ ڈومیسائل  تو اسی دن اور کچھ تو  تین دن میں بھی بن جاتے تھے۔ڈومیسائل لینے کے لئے آنے جانے پر بھی ایک ہزار سے اوپر تک ایک سائل کا خرچہ آتا ہے۔ مزید کہا کہ ڈومیسائل کے لئے اتنا ذلیل کیاجاتا ہے کہ بندہ ڈومیسائل بننا ہی چھوڑ دیتے ہے اور رشوت دینے پر مجبور کیاجاتا ہے۔اج کل کالج میں طلباء کے داخلے شروع ہوگئے جن کے لئے ڈومیسائل بہت ضروری ہوتا ہے  کہ وہ داخلے کے لئے ڈومیسائل بنائے لیکن یہاں پر ڈومیسائل بنانے میں مہینے سے بھی زیادہ وقت گزارتے ہیں۔جن کی وجہ سے طلباء کالج میں  داخلے سے بھی راہ جاتے ہے۔انہوں حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ عام لوگوں کیلئے ڈومیسائل بنانے میں مشکلات کو دور کیا جائے اور جو لوگ اس میں رکاوٹ ہے ان کو کھڑی سزا دی جائے جبکہ   طلباء کے لئے علیحدہ ڈیسک قائم کیاجائے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -