ٹرانسپورٹرز کی جانب سے مطالبات کے حل کیلئے 18 اکتوبر کی ڈیڈ لائن

 ٹرانسپورٹرز کی جانب سے مطالبات کے حل کیلئے 18 اکتوبر کی ڈیڈ لائن

  

بنوں (نمائندہ خصوصی)نیوجنرل بس سٹینڈ کے تاجروں اور ٹرانسپورٹروں نے ایگزیکٹیو آفیسر کی جانب سے دکانداروں کا شیڈ ختم کرنے اور دکانوں کے باہر گاڑیاں کھڑی نہ کرنے کے خلاف شٹر ڈاؤن ہڑتال کرکے مذاکرات کے ذریعے پر امن طریقے سے مسائل حل کرنے کیلئے18اکتوبر کی ڈیڈ لائن دیدی اور 18اکتوبر تک مسائل حل نہ ہونے کی صورت میں احتجاجی تحریک تیز کرنے کی دھمکی دیدی دکانداروں اور ٹرانسپورٹروں نے دکانیں بند کرکے احتجاجی جلسہ منعقد کیا جس سے خطاب کرتے ہوئے ٹرانسپورٹ یونینوں کے سربراہ وسابق ڈسٹرکٹ کونسلر حجای محمد صدیق خان،آل شاپ کیپر یونین کے صدر حاجی گل پیرودیگر مشران نے کہا کہ ایک طرف اڈے میں سہولیات کا فقدان ہے دوسری جانب ٹرانسپورٹروں اور دکانداروں سے روٹی کا آخری نوالہ بھی چھیننے کی کوشش کی جارہی ہے اڈے میں ایسے لوگوں کو سٹینڈ دیئے جارہے ہیں جن کا ٹرانسپورٹ سے کوئی تعلق نہیں ہے پاکستان کے کسی بھی شہر میں شیڈ دکانوں کیلئے ضروری ہے نیوجنرل بس سٹینڈ رقبے کے لحاظ سے بہت بڑا اڈہ ہے اور دکانداروں  اور مستریوں نے دھوپ سے بچنے کیلئے جو سٹینڈ بنائے ہیں یہ کوئی نئی بات نہیں جب سے اڈہ بنا ہے یہ سٹینڈ دکانداروں نے بنائے ہیں جس کے نیچے سردی گرمی میں گاڑیاں مرمت کرتے ہیں اور کسی بھی ایگزیکٹیو آفیسر نے آج تک ان پر اعتراض نہیں کیا لیکن موجودہ ایگزیکٹیو آفیسر پیسوں کے لالچ میں غیر قانونی اقدامات کے ساتھ ساتھ دکانداروں اور مستریوں کو شیڈز ہٹانے پر بھی تلے ہوئے ہیں جسے ہم کسی صورت تسلیم نہیں کریں گے جیلیں اور ہتھکڑیاں ہمارا راستہ نہیں روک سکتے ہم پر امن لوگ ہیں تاجر ہیں اور رزق حلال کماتے ہیں 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -