جنوبی پنجاب کی پرانی، نئی سکیمیں فنڈز کی فراہمی میں تعطل کے باعث التواء کا شکار 

  جنوبی پنجاب کی پرانی، نئی سکیمیں فنڈز کی فراہمی میں تعطل کے باعث التواء کا ...

  

        ملتان (مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی پنجاب کے گیارہ مختلف اضلاع میں 707 پرانی جبکہ ایک ہزار 730 نئی سکیموں کیلئے 179 ارب روپے کا بجٹ منظور کیا گیا، لیکن فنڈز کی فراہمی میں تعطل کے باعث تا حال کوئی بھی منصوبہ مکمل نہیں کیا جاسکا۔جنوبی پنجاب میں پرانی اور نئی سکیموں کی مجموعی تعدا دو ہزار پانچ سو ہے، جن میں تین ارب روپے کی لاگت کا دو سو بیڈز پر مشتمل مدر اینڈ کئیرہسپتال، ڈیرہ غازیخان میں پانچ ارب روپے کی لاگت سے کارڈیالوجی ہسپتال کی تعمیر کا منصوبہ، نشتر ٹو، کارڈیالوجی کی توسیع اور کڈنی سنٹر کے مختلف منصوبے شامل ہیں،لیکن فنڈز کی فراہمی میں تعطل کے باعث پرانی اور نئی سکیموں میں سے کسی بھی منصوبے کو تا حال مکمل نہیں کیا جا سکا۔جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ اور میٹرو کنٹرول اینڈ کمانڈ روم کی تعمیر کیساتھ مختلف سڑکوں کی توسیع کا کام بھی سست روی کا شکار ہے، لیکن اس کے باوجود ایڈیشنل چیف سیکرٹری کا موقف ہے منظور شدہ سکیموں کیلئے فنڈز کی دستیابی مسئلہ نہیں، اسی لیے متعلقہ ٹھیکیداروں کو کام کی رفتار تیز کرنے کے احکامات دے دئیے ہیں۔حکومت نے رواں سال جنوبی پنجاب کیلئے ایک سو نواسی ارب روپے کا بجٹ منظور کیا،لیکن فنڈز کی فراہمی میں تا خیری حربوں سے کئی منصو بو ں کے تخمینہ لاگت میں بھی ابتک کروڑوں روپے کا اضافہ ہو چکا ہے۔

جنوبی پنجاب

مزید :

پشاورصفحہ آخر -