زمین کی زرخیزی میں اضافہ ، بائیو سلری کانامیاتی کھاد کے طور پر استعمال کا تجربہ کامیاب

زمین کی زرخیزی میں اضافہ ، بائیو سلری کانامیاتی کھاد کے طور پر استعمال کا ...

  

فیصل آباد(بیورورپورٹ )بائیو سلری کو بطور نامیاتی کھاد استعمال کرکے زمین کی ذرخیزی اور فصلوں کی پیداوار میں اضافہ کا کامیاب تجربہ کرلیا گیاہے جبکہ 25مکعب میٹر بائیو گیس پلانٹ سے سالانہ 9780کلوگرام بائیو سلری حاصل ہوتی ہے جس میں 76کلوگرام نائٹروجن ، 96کلوگرام فاسفورس ،107کلوگرام پوٹاشیم، 37کلوگرام آئرن،5کلوگرام میگنیز ، 1437گرام زنک اور 469گرام تانبا کے علاوہ دوسرے اجزائے صغیرہ بھی قلیل مقدار پائے جاتے ہیں۔ماہرین ایوب ریسرچ نے بتایاکہ وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف کے توانائی بچت پروگرام کے تحت پنجاب میں 20ہزار ٹیوب ویلوں کو بائی گیس پر منتقل کیا جارہا ہے ۔انہوں نے بتایاکہ ایک معاہدے کے تحت جرمن کمپنی بائیو انرجی برلن اور پاکستان کمپنی سامیاک باہمی اشتراک سے دو سال کے عرصے میں پنجاب میں ڈیزل پر چلنے والے 20ہزار ٹیوب ویل بائیو گیس پر منتقل کریں گی۔انہوں نے بتایاکہ اس پروگرام کے تحت حکومت پنجاب 5ایکڑ کے کاشتکاروں کو ایک لاکھ روپے جبکہ 5تا12.5ایکڑ تک زرعی زمین کے مالکان کو 75 ہزار روپے سبسڈی دے گی۔انہوں نے بتایاکہ کاشتکاروں کے دیرینہ مطالبہ پر ڈیزل ٹیوب ویلوں کو بائیو گیس پر منتقل کرنے اور بائیو گیس پلانٹس کی تنصیب سے کاشتکاروں کو مالی فائدہ ہوگا اور زرعی شعبہ پراس کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔انہوں نے بتایاکہ بائیو گیس پلانٹ سے نکلنے والی اعلیٰ معیار کی نامیاتی کھاد ’’بائیوسلری‘‘کے استعمال سے فصلوں اور سبزیوں کی پیداوار میں30فیصد تک اضافہ اور کیمیائی کھادوں کے اخراجات میں 50فیصد تک بچت ہوگی۔انہوں نے بتایاکہ بائیو سلری سے مرادگوبر اور پانی کا وہ مکسچر ہے جو بائیو گیس بننے کے بائیو گیس پلانٹ سے گزر کر خارج ہوتا ہے ۔

۱انہوں نے بتایاکہ ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد اور زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے زرعی سائنسدانوں نے اپنی تحقیق میں ثابت کیا ہے کہ بائیو سلری کو بطور نامیاتی کھاد استعمال کرکے زمین کی ذرخیزی اور فصلوں کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے بتایاکہ بائیو گیس پلانٹ کو پختہ نالی کے ذریعے پانی کے کھال سے ملا کر بائیو سلری کو فصلوں میں استعمال کرنے سے پودوں کو اس میں موجود نامیاتی اجزاء براہ راست حاصل ہوجاتے ہیں جس سے ان کی بڑھوتری میں اضافہ ہوجاتاہے اور مختلف فصلوں اور سبزیوں کی پیداوار میں 30فیصد تک اضافہ نوٹ کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایاکہ بائیو سلری کے مسلسل استعمال سے زمینوں میں پانی رکھنے کی صلاحیت بڑھ جاتی ہے اور ان کی ذرخیزی میں اضافہ ہوجاتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ گوبر کی بجائے بائیو سلری کے استعمال سے فصلوں میں نقصان دہ جڑی بوٹیوں کی تعداد میں کمی واقع ہوجاتی ہے ۔مزید برآں پودوں میں گرمی اورزیادہ درجہ حرارت برداشت کرنے کی صلاحیت بڑھنے کے ساتھ ساتھ مختلف بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت میں بھی نمایا ں اضافہ ہوجاتا ہے ۔

مزید :

کامرس -