انتخابی مہم عروج پر ، پیپلز پارٹی ، ملی مسلم لیگ ، جماعت اسلامی ، آزاد امیدواروں کے حمایتی پیش پیش

انتخابی مہم عروج پر ، پیپلز پارٹی ، ملی مسلم لیگ ، جماعت اسلامی ، آزاد ...

  

لاہور( رپورٹ : دیبا مرزا :تصاویر : ذیشان منیر )صوبائی دارلحکومت کے حلقہ این اے 120 کی انتخابی مہم عروج پرپہنچ گئی ہے۔اس ضمنی الیکشن میں حصہ لینے والی ملک کی چھو ٹی بڑی سیاسی پارٹیوں کے علاوہ آزاد حیثیت سے بھی الیکشن لڑنے والوں کے واضح اکثر یت سے جیتنے کے دعوے ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف ، پاکستان مسلم لیگ (ن)،پاکستان پیپلز پارٹی ، ملی مسلم لیگ اورجماعت اسلامی سمیت دیگر آزاد امیدواروں کے حمایتی انتخابی مہم میں دن رات پیش پیش ہیں۔ این اے 120کے مختلف علاقوں میں ان امیدواروں کی طرف سے کھلنے والے انتخابی دفاتر باقاعدہ سیاسی میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگے ہیں۔ حلقہ بھر میں اپنی اپنی پارٹی کے ترانوں کی آوازیں ،بینرز اور فلیکسوں کی بھر مار سے حلقے کے تمام درو دیوار سج گئے ہیں ۔دوسری جانب بڑ ی سیاسی پارٹیوں کا دیگر امیدواروں سے جوڑ توڑ کا عمل بھی تیزی پکڑنے لگا ہے ۔ووٹروں کی بڑی تعداد کو گھروں سے نکال کر پولنگ سٹیشن تک پہنچانے کے لیے خفیہ طور پرفری ٹرانسپورٹ اور دیگر سہولتیں فراہم کرنے کے لیے بڑی سیاسی پارٹیوں کے امیدواروں کی طرف سے پلان مرتب کیے جانے لگے ہیں ۔ ’روز نامہ پاکستان‘‘ نے اس حلقہ کے اہم ترین علاقے موہنی روڈ کا دورہ کیا جہاں مسلم لیگ کے صوبائی وزیر خوراک بلال یاسین کے ڈیرے پر ضمنی الیکشن کی تیاریوں کے حوالے سے اہم میٹنگ ہوئی جس میں ایم پی اے سیف الموک کھوکھر ‘ بی بی وڈیری ‘ زاہدہ اظہر اور نبیلہ یاسمین سمیت دیگر نے شرکت کی ان راہنماؤں کا ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ یہ حلقہ میاں نواز شریف کا گڑھ تھا ہے اور رہے گا ہمیں اللہ کے گھر میں اس بات کا پورا یقین ہے کہ بیگم کلثوم نواز اپنے شوہر اور ہمارے قائد میاں نواز شریف سے بھی زیادہ ووٹ لیکر کامیاب ہوں گی اور ان کی یہ کامیابی اس حلقہ کے عوام کی طرف سے ان لوگوں کے لئے ایک بھرپور پیغام ہو گا جو لوگ یہ کہتے تھے کہ میاں نواز شریف کے ساتھ عوام کی طاقت نہیں ، حلقہ کے عوام کی طرح عوام نے بھی میاں نواز شریف کو وزارت عظمی سے ہٹانے کا فیصلہ قبول نہیں کیا اس لئے ہم یہ بات دعوے سے کہتے ہیں کہ بیگم کلثوم نواز کی جیت واضح پیغام ہے کہ حلقہ کے عوام ہمیشہ کی طرح (ن) لیگ کے ساتھ ہیں اور رہیں گے ۔سروے کے دوران جب اس حلقہ میں واقع پیپلز پارٹی کے مرکزی الیکشن آفس حافظ زبیر کاردار جن کو پیپلز پارٹی نے اس الیکشن کا فوکل پرسن بھی مقرر کیا ہے ان کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی اس الیکشن میں ایک بڑا سیٹ بیک دے گی جبکہ ان کے آفس میں موجود دیگر جیالوں مرزا الیاس بیگ ‘ افضل بٹ‘ رانا جمیل اختر‘ طارق بٹ اور عبد الغفور بھی کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ والے حکومتی نشے میں دھت ہو کر اس زعم میں ہیں کہ وہ ہمیشہ کی طرح اب بھی دھونس اور دھاندلی کرکے جیت جائیں گے لیکن یہ ان کی غلط فہمی ہے اس مرتبہ نہ تو ان کی بدمعاشی چلے گی اور نہ ہی ہم دھونس دھاندلی کو چلنے دیں گے پیپلز پارٹی کا ورکر پوری طرح سے چارج ہو چکا ہے اور وہ پولنگ سٹیشن کے اندر اور باہر اپنے ووٹرز کا بھرپور دفاع کر ے گا اس مرتبہ جیت پیپلز پارٹی کا مقدر بنے گی ۔اسی طرح پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد اور ان کی دن رات انتخابی مہم چلانے والی خواتین مسرت چیمہ‘ شنیلہ روتھ‘ عندلیب عباس‘ نسیم زہراء اور نیلم اشرف نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف اس مرتبہ (ن) لیگ کو جیتنے نہیں دے گی پانامہ لیکس کی رانی مریم نواز اگر اپنی بلٹ پروف گاڑیوں کے لاؤ لشکر سے اتر کر حلقہ میں گھر گھر انتخابی مہم کریں گی تو ان کو پتہ چلے گا کہ ان کے والد محترم نے اپنے چار سالہ دور اقتدار میں یہاں کے عوام کی محرومیوں میں سوائے اضافے کے کچھ بھی نہیں کیا ہے اس حلقہ کے عوام نے کلثوم نواز کو ووٹ نہ دیکر اپنا بدلہ لین کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ملی مسلم لیگ کے حمائت یافتہ شیخ محمد یعقوب کا کہنا تھا کہ مجھے حلقہ بھر کے عوام نے ڈور ٹو مہم میں یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ مجھے کامیاب کروائیں گے مجھے انتخابی مہم کے دوران بہترین رسپانس مل رہا ہے ۔اسی طرح سے آزاد امیدوار روحی کھوکھر بھی سروے کے دوران پر امید نظر آئیں کہ انہیں بھی الیکشن کے دن اچھے خاصے ووٹ ملیں گے جبکہ پیپلز پارٹی ورکرز گروپ کی امیدوار ساجدہ میر کا بھی کہنا تھا کہ ان کی جیت یقین ہے یہ حلقہ کیونکہ شروع سے ہی جیالوں کا گڑھ رہا ہے اور میں تو پیدائشی جیالی ہوں اس لئے میری جیت یقینی ہے۔

این اے 120

مزید :

صفحہ اول -