ساری دنیا کی نظریں شمالی کوریا پر لیکن بڑی جنگ کسی اور جگہ شروع ہونے والی ہے، وہ جگہ جہاں ہزاروں امریکی اور روسی فوجی ایک دوسرے کے سامنے آگئے

ساری دنیا کی نظریں شمالی کوریا پر لیکن بڑی جنگ کسی اور جگہ شروع ہونے والی ہے، ...
ساری دنیا کی نظریں شمالی کوریا پر لیکن بڑی جنگ کسی اور جگہ شروع ہونے والی ہے، وہ جگہ جہاں ہزاروں امریکی اور روسی فوجی ایک دوسرے کے سامنے آگئے

  

وارسا(مانیٹرنگ ڈیسک) پوری دنیا کی نظریں شمالی کوریا پر لگی ہیں کہ اس کے نت نئے ایٹمی تجربات عالمی جنگ کو دعوت دیتے نظر آ رہے ہیں لیکن درحقیقت جنگ کہیں اور شروع ہونے والی ہے جہاں امریکی اور روسی افواج آمنے سامنے آ چکی ہیں۔ نیوزویک کی رپورٹ کے مطابق امریکہ اور روس کے مابین کشیدگی اس حد تک بڑھ گئی ہے کہ امریکی فوج نے اپنے ٹینک اور دیگر جنگی سازوسامان پولینڈ میں روس کی سرحد کے قریب پہنچا دیا ہے۔ روس کی طرف سے یورپی ممالک پریوکرین کی طرز کے ممکنہ حملے کے پیش نظر امریکی فوج کی طرف سے یہ اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔

شمالی کوریا کی جانب سے ایٹمی دھماکوں کے بعد ہمسایہ ممالک میں کیا خطرناک ترین چیز تیزی سے پھیلنے لگی؟ اب تک کی سب سے خطرناک خبر آگئی

رپورٹ کے مطابق امریکی فوج کی طرف سے یہ اقدام روس کی طرف سے یوکرین پر قبضے کی طرح دیگر ممالک پر حملے کے خدشے کے پیش نظر اٹھایا جا رہا ہے۔ نیٹو افواج پولینڈ، لیتھوانیا، لاتویا اور ایستونیا میں 4انٹرنیشنل بٹالینز تعینات کر چکی ہے اور امریکی فوج کی طرف سے بھی اپنی سیکنڈ آرمرڈ بریگیڈ اور فرسٹ انفنٹری ڈویژن وہاں تعینات کی جا چکی ہے۔یورپ میں موجود امریکی فوج کے ترجمان ماسٹرسرجنٹ برینٹ ویلیمز کا کہنا تھا کہ ”یورپ میں پہلی بار امریکی فوج کی دو بریگیڈز پورے جنگی سازوسامان کے ساتھ تعینات کی گئی ہیں جو پورے مشرقی یورپ میں آپریشن کریں گی اور مقامی افواج کے ساتھ مشترکہ مشقیں کریں گی۔“

مزید :

بین الاقوامی -