”گھر گئے ایک مہینہ ہوگیا، گرمی میں اضافے سے نظر کی چمک بڑھ رہی ہے اورہر کوئی خوبصورت نظر آرہا ہے، گنے کا رس اور تخم ملنگا بھی کارگر نہیں ہورہے اس لیے ۔۔۔ “ پولیس اہلکار کی چھٹی کیلئے انتہائی مضحکہ خیز درخواست

”گھر گئے ایک مہینہ ہوگیا، گرمی میں اضافے سے نظر کی چمک بڑھ رہی ہے اورہر کوئی ...
”گھر گئے ایک مہینہ ہوگیا، گرمی میں اضافے سے نظر کی چمک بڑھ رہی ہے اورہر کوئی خوبصورت نظر آرہا ہے، گنے کا رس اور تخم ملنگا بھی کارگر نہیں ہورہے اس لیے ۔۔۔ “ پولیس اہلکار کی چھٹی کیلئے انتہائی مضحکہ خیز درخواست

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سکولوں کے بچے چھٹی کے لیے طرح طرح کے بہانے گھڑتے ہیں اور بعض اوقات چھٹی کی وجوہات اتنی دلچسپ ہوتی ہیں کہ سن کر ہی ہنسی آجاتی ہے ، لیکن پروفیشنل زندگی میں چھٹی کے لیے بہانے بازی یا مضحکہ خیز وجوہات کا تصور بھی محال ہے، عمومی طور پر سرکاری یا پرائیویٹ اداروں کے ملازمین اپنا مسئلہ سیدھے الفاظ میں بیان کرکے چھٹی حاصل کرلیتے ہیں لیکن لاہور میں تعینات ایک پولیس اہلکار نے تو ایسی درخواست لکھ دی ہے کہ جان کر ہی ہنسی آجائے۔

سوشل میڈیا پر وائرل یہ درخواست سرکل نیازی شہید رنگ روڈ پولیس لاہور کے ایک پردیسی اہلکار کی جانب سے لکھی گئی ہے جس میں اس نے اپنے کمانڈنٹ سے چھٹی مانگی ہے۔

اہلکار نے لکھا ” گزارش ہے کہ بندہ نیازی شہید سرکل میں بطور JPO ڈیوٹی کے فرائض سرانجام دے رہا ہے ، بندہ کا تعلق جنوبی پنجاب کی تحصیل میلسی سے ہے جو لاہور سے تقریباً 400 کلومیٹر دور ہے، بندہ جو کہ سنت رسول ﷺ کے عین مطابق شادی شدہ ہے کو گھر گئے ہوئے تقریباً ایک ماہ سے زائد کا عرصہ بیت گیا ہے“۔

پولیس اہلکار کی جانب سے چھٹی پر نہ جانے کے سائڈ افیکٹس کا بھی بھرپور انداز میں تذکرہ کیا گیا اور اپنی روداد کچھ ان الفاظ میں بیان کی گئی ”بندہ گزشتہ 3 دن سے مسلسل بشری تقاضے کی وجہ سے غسل کر رہا ہے، بندہ کے ہر وقت عجیب خیالات اور جذبات امڈتے رہتے ہیں اور موسمی حالات میں بدلاﺅ بھی طبیعت پر اثر انداز ہورہا ہے، جوں جوں گرمیں اضافہ ہورہا ہے بندہ کی نظر میں چمک بڑھتی جارہی ہے اور بلالحاظ جنس سب خوبصورت دکھائی دیتے ہیں، بندہ کے خیالات اور جذبات قابو سے باہر ہوتے جارہے ہیں اور گنے کا رس اور تخم ملنگا بھی کارگر ثابت نہیں ہورہے، موجودہ نازک صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے بندہ کا گھر جانا اشد ضروری ہوگیا ہے“۔

درخواست گزار پولیس اہلکار کو اپنے تمام مسائل اور اتنی زیادہ بیماریوں کا واحد حل چھٹی کی صورت میں نظر آیا اور اس نے اپنے کمانڈنٹ کو چھٹی کی دوا کرنے کی تجویز دی اور ساتھ چھٹی نہ ملنے کے نقصانات پر روشنی کچھ ان الفاظ میں ڈالی ، ” اس سے پہلے کہ بندہ کوئی غیر اخلاقی کام اور بدفعلی کا مرتکب ہو کر محکمہ ہٰذا کی بدنامی کا باعث بنے ، مہربانی فرما کر بندہ کو رخصت عنایت فرمائی جائے ، تمام حالات اور جذبات کو مدنظر رکھتے ہوئے چھٹی کا حکم صادر فرمایا جائے اور بندے کو شکریہ کا موقع فراہم کیا جائے“۔

اتنی دلچسپ اور مضحکہ خیز درخواست لکھنے کے بعد ’ بندہ‘ کو چھٹی ملی یا نہیں، اس حوالے سے راوی کچھ بھی بیان کرنے سے قاصر ہیں لیکن سوشل میڈیا صارفین یہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ ’ بندہ‘ کو فوراً سے بھی پہلے چھٹی پر بھیج دینا چاہیے تاکہ محکمہ پولیس کی رہی سہی ’عزت‘ بچائی جاسکے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس