ہیلتھ آفس ملتان:سرکاری ریکارڈ  کی چوری،پرانے ملازمین متحرک جونیئر اہلکاروں کیخلاف درخواستیں  دیکر بلیک میل کرنے کا انکشاف

  ہیلتھ آفس ملتان:سرکاری ریکارڈ  کی چوری،پرانے ملازمین متحرک جونیئر ...

  

 ملتان (وقائع نگار) محکمہ صحت ملتان انتظامیہ کی کمزور حکمت عملی۔ دفتری اہم سرکاری ریکارڈ کی چوری بڑھ گئی۔جس کے(بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

 ذریعے سابق و موجودہ  بلیک میلر ملازمین اپنے سیئر و جونیئر ملازمین کے خلاف  درخواستیں دینے لگے ہیں۔مذکورہ صورت حال پر سی ای ہیلتھ آفس میں نوکری پیشہ افراد میں تشویش کی لہر دوڑ  پائی جاتی ہے۔اور انکے لئے نوکری کرنا محال بنتا جارہا ہے بتایا جارہا ہے کہ محکمہ صحت ملتان میں گزشتہ پانچ سالوں سے سابق و موجودہ ملازمین پر مشتمل  بلیک میلر  کا ایک گروہ بنا ہوا ہے۔جو سب سے پہلے محکمہ صحت  کے عملے کے  ساتھ مل کر سرکاری ریکارڈ کو چوری کرتے ہیں۔اور پھر اس چوری شدہ ریکارڈ کی کاپی کرواکر محکمانہ اور تحقیقاتی اداروں میں ملازمین کے خلاف  درخواستیں دیتے ہیں۔جس پر انکوائری شروع ہوجاتی ہے۔ذرائع کے مطابق یہی گروہ ہر نئے آنے والے افسر کو اپنے ساتھی ملازمین کے خلاف جھوٹ موٹ پر مبنی باتوں میں الجھ کر   گمراہ کرتے ہیں۔ اور پھر اسکا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہیں۔بعدازاں من مانیاں پوری نہ ہونے پر انہیں افسران کو کی دفتری امور کی کمزوریاں پکڑ کر اسکو بلیک میل کرنا شروع کردیتے ہیں۔اور اگر پھر بھی  متعلقہ افسر بات نہ مانے۔تو اسکے خلاف محکمانہ اور تحقیقاتی اداروں میں درخواستیں دینا شروع کر دیتے ہیں۔باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ محکمہ صحت ملتان میں اس وقت بھی کچھ بلیک میلر اپنے ساتھی ملازمین کے خلاف جھوٹی درخواستیں دیگر انکو پریشان کر رہے ہیں۔جسکی وجہ وہ شریف ملازمین شدید ذہنی اذیت کا شکار ہیں۔انہوں نے صحت کے اعلی حکام۔کمشنر و ڈپٹی کمشنر  ملتان سے مذکورہ صورت حال پر فوری نوٹس لینے۔اور دفتری سرکاری دستاویزات چوری کرنے والوں  کے خلاف  قانونی کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔اور ڈی جی اینٹی کرپشن سے اپیل کی ہے کہ وہ ہر اس شہری سے درخواست وصول کرنے سے قبل سرکاری ریکارڈ کی فراہمی  کا طریقہ کار پوچھیں۔اور جو شخص سرکاری ریکارڈ چورا کر درخواستیں دیتا ہے اس کے خلاف سب سے پہلے قانونی کاروائی کی جائے۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -