کراچی لاوارث نہیں، بچہ بچہ شہر کا وارث ہے، مصطفی کمال 

 کراچی لاوارث نہیں، بچہ بچہ شہر کا وارث ہے، مصطفی کمال 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کراچی لاوارث نہیں، کراچی کا بچہ بچہ شہر کا وارث ہے،اگر کراچی کو اسکا جائز حق نہیں دیا گیا تو ہم عوام کے ساتھ سڑکوں پر ہونگے، میں اپنے بچوں کو لے کر سب سے آگے چلوں گا،تمام مائیں بہنیں اپنے بچوں کے ہمراہ آئیں کسی کی جان اگر گئی تو پہلے میری اور میرے گھر والوں کی جائے گی،کراچی کو ریلیف پیکیج دینا ایسا ہی ہے جیسے کسی مزدور کی پورے مہینے کی تنخواہ اس سے چھین کر اسے بریانی کی تھیلی دے دی جائے۔ کراچی کو کسی امداد کی ضرورت نہیں، یہ شہر پورے پاکستان کو پالنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔کراچی والے پیکج نہیں اپنے حقوق مانگ رہے ہیں، کراچی مالی اور انتظامی خودمختاری چاہتا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے امان ٹاورز، کورنگی کراسنگ اور مسجد قبا چوک، ناصر کالونی پر موجود عوام کے جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت سے ہمیں کوئی امید نہیں تھی لیکن جب چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف کراچی کے مسائل کے حل کیلئے فعال ہوئے تو عوام کی امید بندھی لیکن وزیر اعظم عمران خان آئے اور کراچی کو 1100 ارب دیئے نہیں بلکہ ایک کاغذ پر پڑھ کر چلے گئے، جس سے مایوسی پھیلی، اگر حالات اب بھی نہ بدلے تو عوام میں مایوسی حکومت سے نہیں اداروں سے ہوگی۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان اگر کراچی سے مخلص ہیں تو اس شہر کی گنتی صحیح کرائیں۔ جب تک شہر کی صحیح مردم شماری نہیں کرائی جاتی تب تک کسی بات کا اعتبار نہیں، چیف جسٹس کہتے ہیں کہ آبادی ساڑھے تین کروڑ ہے، سابق صدر آصف زرداری کہتے ہیں کہ 3 کروڑ ہے جبکہ سرکاری کاغذات میں 1 کروڑ 60 لاکھ ہے۔ صحیح آبادی کے لحاظ سے اگر نشستیں دی جائی تو وزیر اعلی شہری سندھ سے منتخب ہوگا۔   اس موقع پر سید مصطفی کمال نے علاقہ مکینوں سے خطاب اور تاجروں سے ملاقاتیں کیں جبکہ ایک عظیم الشان ریلی کی صورت میں کورنگی کے مختلف علاقوں کا دورہ بھی کیا۔ اس موقع پر پارٹی صدر انیس قائم خانی و اراکین سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی و نیشنل کونسل بھی  انکے ہمراہ موجود تھے۔

مزید :

صفحہ آخر -