کورونا کے وار جاری، مزید  67اموات، 2988نئے مریض رپور ٹ

  کورونا کے وار جاری، مزید  67اموات، 2988نئے مریض رپور ٹ

  

 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں)پاکستان میں عالمی وباء کورونا کے باعث گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 67 افراد انتقال کر گئے اور 2988 نئے مریض بھی سامنے آئے۔پاکستان میں کورونا کے اعداد و شمار بتانیوالی ویب سائٹ (covid.gov.pk) کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کورونا کے 53158 ٹیسٹ کیے گئے جس میں سے 2988 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو ئی جبکہ وائرس سے مزید 67 افراد انتقال کر گئے۔سرکاری پورٹل کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں کورونا کے مثبت کیسز کی شرح 5.62 فیصد رہی۔این سی او سی کے اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر میں کورونا سے اموات کی تعداد 26787 جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد 12 لاکھ 7 ہزار 508 تک پہنچ چکی ہے۔اس کے علاوہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 3391 افراد کوورنا سے صحتیاب بھی ہوئے جس کے بعد ملک میں وبا سے شفایاب ہونیوالے افراد کی تعداد 10 لاکھ 90 ہزار 176 ہو گئی ہے جبکہ ملک میں فعال کیسز کی تعداد 90545 ہو گئی ہے۔ادھرنیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی اوسی) نے کہا ہے کہ تمام اہل پاکستانی اپنی ویکسی نیشن جلد از جلد مکمل کروائیں۔ پیر کو این سی او سی کے مطابق تمام اہل افراد دوسری خوراک بھی لگوائیں، پرُ ہجوم جگہوں پر بلاوجہ جانے سے پر ہیز کریں، ماسک کا استعمال اور سماجی فاصلہ برقرار رکھیں کورونا کیخلاف جنگ میں حکومت کا ساتھ دیں۔

کورونا اموات

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) اسلام آباد ریسٹورنٹس ایسوسی ایشن کی جانب سے ریسٹورنٹس کی بندش کیخلاف این سی اوسی کے باہراحتجاج کا اعلان کیا گیا ہے۔ پیر کو یہ فیصلہ اسلام آباد ریسٹورنٹس ایسوسی ایشن کے ہنگامی اجلاس میں ہوا، اجلاس میں ملک بھر میں ریسٹورنٹس انڈسٹری کی تیزی سے خراب ہوتی معاشی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ اعلامیہ کے مطابق ڈیڑھ سال سے ریسٹورنٹس کو غیر ضروری بندش کا سامنا ہے جس کی وجہ سے متعدد ریسٹورنٹس مستقل بند ہو گئے ہیں۔ چیئرمین نے کہادنیا بھر میں ریسٹورنٹس سے کورونا پھیلنے کے حوالے سے ٹھوس تحقیق موجود نہیں، تمام کاروباری شعبے کورونا ایس او پیز کیساتھ آسانی سے کاروبار کررہے ہیں، سمجھ سے بالاتر ہے کہ صرف ریسٹورنٹس کو ہی کیوں ہفتہ اوراتوار بندش کا سامنا ہے۔اعلامیہ کے مطابق حکومت فیصلہ کرے ریسٹورنٹس انڈسٹری کو مکمل بند کرنا اور اسی لاکھ روزانہ اجرت کمانیوالوں کا گلا گھونٹنا ہے یا کورونا ایس او پیز کیساتھ اس انڈسٹری کوکھولنے کی اجازت دینی ہے، حالانکہ ملک بھرمیں ایس او پیز کی خلاف ورزیاں کرتے ہوئے بڑی بڑی سیاسی سرگرمیاں جاری ہیں، سرکاری سطح پر بھی ہر طرح کی اجتماعی تقریبات کا اہتمام ہورہاہے، ہوائی جہازوں،ٹرینوں اور بسوں میں لوگ کچھا کھچ سفرکر رہے ہیں، اس سب کے باوجود صرف ریسٹورنٹس کو ہی بند کیا جاتا ہے اورایک خاندان کو ایک میز پر بیٹھ کر کھانے کی اجازت نہیں۔اعلامیہ کے مطابق ریسٹورنٹ کو مزید بند کرنے کی یہ ناانصافی مزید برداشت نہیں کی جائیگی۔ اگرایک ریسٹورنٹ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرتا ہے تو صرف اسی ریسٹورنٹ کو ہی بند کرنا چاہیے  لیکن حکومت پوری انڈسٹری کو بند کر دیتی ہے، حکومت فوری طور پر ہماری شکایات کا ازالہ کرے اور ریسٹورنٹس کو ہفتہ اوراتوار کو کھولنے کی اجازت دے۔ بصورت دیگر سڑکوں پر نکلیں گے۔

احتجاج اعلان

مزید :

صفحہ اول -