افغان مسئلے پرتساہل کے سنگین  نتائج برآمد ہوسکتے ہیں،وزیرخارجہ 

  افغان مسئلے پرتساہل کے سنگین  نتائج برآمد ہوسکتے ہیں،وزیرخارجہ 

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغانستان میں عوام کو انسانی بنیادوں پر نہایت ضروری مدد کی فراہمی کیلئے اقوام متحدہ کی کوششوں کی تعریف کرتے کہا ہے کہ مسائل انتہائی کٹھن ہیں،افغانستان کے تقریبا ًایک کروڑ80 لاکھ عوام کو صورتحال میں انسانی بنیادوں پر امداد کی اشد ضرورت ہے،عالمی برادری کی جانب سے تساہل پر مبنی ردعمل ہو تو اس کے سنگین انسانی نتائج برآمد ہوسکتے ہیں،نازک مرحلے پر افغانستان کے عوام کے ساتھ یک جہتی کا اظہار کرنا ہوگا۔ پیر کو وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے افغانستان میں انسانی صورتحال پر اعلی سطحی وزارتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ افغانستان میں عوام کو انسانی بنیادوں پر نہایت ضروری مدد کی فراہمی کے لئے اقوام متحدہ کی کوششوں کا پاکستان خیرمقدم کرتا ہے اور انہیں سراہتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ پائیدار امن اور ترقی کی طرف سفر شروع کرتے ہوئے آج کا افغانستان ایک اہم موقع فراہم کرتا ہے،تنازعات کے پے درپے ادوار اور گزشتہ چار دہائیوں سے جاری عدم استحکام کو آخر کار روکا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ مسائل انتہائی کٹھن ہیں،افغانستان کے قریبا ایک کروڑ80 لاکھ عوام کو اس صورتحال میں انسانی بنیادوں پر امداد کی اشد ضرورت ہے،عالمی برادری کی جانب سے تساہل پر مبنی ردعمل ہو تو اس کے سنگین انسانی نتائج برآمد ہوسکتے ہیں،اس اہم اور نازک مرحلے پر افغانستان کے عوام کے ساتھ یک جہتی کا اظہار کرنا ہوگا جس میں مالی اور سیاسی حمایت دونوں شامل ہیں۔ اس وقت ترقیاتی نئی شراکت داریوں کی ضرورت ہے، قوم کی تعمیر میں حمایت درکار ہے اور افغان آبادی کی انسانی بنیادوں پر مطلوب ضروریات کو پورا کرنا ہوگا۔ وزیرخارجہ 

مزید :

صفحہ اول -