بزرگ کشمیری راہنما سید علی گیلانی کو خراج عقیدت کے لیے دبئی قونصلیٹ میں سیمینار

بزرگ کشمیری راہنما سید علی گیلانی کو خراج عقیدت کے لیے دبئی قونصلیٹ میں ...
بزرگ کشمیری راہنما سید علی گیلانی کو خراج عقیدت کے لیے دبئی قونصلیٹ میں سیمینار

  

دبئی (طاہر منیر طاہر) بزرگ کشمیری راہنما سید علی شاہ گیلانی کی آزادی کشمیر کے لیے گرانقدر خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے سرکاری سطح پر قونصلیٹ جنرل آف پاکستان دبئی میں خصوصی سیمینار کا اہتمام کیا گیا جس میں قونصلیٹ سٹاف، کشمیری اور پاکستانی کمیونٹی کے لوگوں نے شرکت کی۔

اس موقع پر قونصلیٹ جنرل آف پاکستان دبئی کے قونصل جنرل حسن افضل خان، کشمیری لیڈروں سردار ارشد، سردار جاوید یعقوب، راجہ عبدالجبار، عظیم رفاعی، حافظ عتیق منہاس، راجہ عاشق، چودھری نذیر، امجد کبیر، ساجد عباسی، عمران علی، نعیم رسول اور دیگر مقررین نے تقاریر کرتے ہوئے کشمیری لیڈر سید علی گیلانی کی آزادی کے لیے مسلسل کوششوں کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا۔ متذکرہ مقررین نے کہا کہ مرحوم علی گیلانی ساری عمر کشمیر کی آزادی کے لیے گزاری خود بھی پابند سلاسل رہے اور وطن کی آزادی کے لیے بھارت کی طرف سے دی جانے والی اذیتوں کو بھی برداشت کیا۔ سید علی گیلانی صحیح معنوں میں محب وطن لیڈر تھے اور پاکستان کے خیر خواہ تھے۔ ان کا ایک نعرہ بے حد مشہور ہوا ”ہم پاکستانی ہیں اور پاکستان ہمارا ہے“ وہ ساری عمر اسی نعرہ کو سچ کر دکھانے کے لیے کوشش کرتے رہے۔ بھارتی سامراج کی طرف سے ہزاروں پابندیوں کے باوجود ان کے جذبہ حب الوطنی اور جذبہ آزادی میں ذرا لغزش نہ آئی بلکہ وہ کشمیر کی آزادی کے لیے کام کرتے رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کشمیر، کشمیریوں کا ہے لہٰذا آزادی ان کا بنیادی حق ہے جو انہیں ہر حال میں ملنا چاہیے۔

سید علی گیلانی ایک لمبے عرصہ تک مقبوضہ کشمیر کی مختلف جیلوں میں ایک طویل عرصہ تک نظر بند رہ ے۔ بھارتی سامراج نے سید علی گیلانی کو تشدد اور دباﺅ کے ذریعے اپنے موقف سے ہٹانے کی بے حد کوشش کی لیکن علی گیلانی بھارتی سامراج کے آگے نہ جھکے بلکہ مزید مضبوطی اور قوت سے بھارتی ظلم و تشدد کا مقابلہ کرتے رہے۔ سید علی گیلانی اپنی ذات میں یکتا عظیم لیڈر تھے جنہوں نے ساری عمر اپنی قوم کی آزادی کے لیے کوشش کرتے ہوئے گزاری۔ علی گیلانی کے انتقال سے ایک بہت بڑا سیاسی خلا پیدا ہوگیا ہے اور کشمیری عوام ایک دلیر لیڈر سے محروم ہوگئے ہیں جن کا نعم البدل ملنا ناممکن ہے۔

قونصلیٹ میں ہونے والے سیمینار میں مرحوم سید علی گیلانی کے لیے دعائے مغفرت و بخشش کی گئی۔ اس موقع پر کشمیری لیڈران نے اس بات کا اعادہ کیا کہ وہ سید علی گیلانی کا مشن جاری رکھیں گے اور کشمیر کی آزادی تک بھارتی سامراج سے لڑیں گے۔

مزید :

تارکین پاکستان -