سپریم کورٹ کا سرگودھا سے لاپتہ ہونے والی لڑکی کو بازیاب کرانے کا حکم

سپریم کورٹ کا سرگودھا سے لاپتہ ہونے والی لڑکی کو بازیاب کرانے کا حکم
سپریم کورٹ کا سرگودھا سے لاپتہ ہونے والی لڑکی کو بازیاب کرانے کا حکم

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) سپریم کورٹ نے پولیس کو سرگودھا سے ایک سال قبل لاپتہ ہونے والی لڑکی کو بازیاب کرانے کا حکم جاری کردیا۔عدالت عظمیٰ نے ایس ڈی پی او سرگودھا سے پیشرفت رپورٹ بھی طلب کرلی۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق سپریم کورٹ میں جسٹس مقبول باقر کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سرگودھا سے لاپتہ ہونے والی لڑکی کی بازیابی سے متعلق کیس کی سماعت کی۔جسٹس مقبول باقر نے ریمارکس دیئے کہ لڑکی کو گمشدہ ہوئے ایک سال ہوگیا ہے اور پولیس آرام سے بیٹھی ہے،پولیس بازیابی میں اب تک ناکام کیوں ہوئی؟۔

جسٹس قاضی امین نے استفسار کیا کہ لڑکی ایک سال سے غائب ہے، پولیس نے تلاش کرنے کے لئے کیا کیا؟، ان کا کہنا تھا کہ عدالت گمشدہ لڑکی کے والدین کے ساتھ ہے،لڑکی کا بازیاب نہ ہونا پولیس کی غیر ذمہ داری اور مس کنڈیکٹ ہے۔

عدالت عظمیٰ نے پولیس حکام کو حکم جاری کیا کہ بچی کو تلاش کرکے معاملے کو انجام تک پہنچائیں۔

واضح رہے کہ ثوبیہ بتول نامی لڑکی ایک سال پہلے سرگودھا سے لاپتا ہوگئی تھی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -