حکومت فاٹا کی ترقی کے لئے کیا اقدامات اٹھا رہی ہے ؟وزیر خزانہ شوکت ترین نے ہر چیز تفصیل سے بتا دی 

حکومت فاٹا کی ترقی کے لئے کیا اقدامات اٹھا رہی ہے ؟وزیر خزانہ شوکت ترین نے ہر ...
حکومت فاٹا کی ترقی کے لئے کیا اقدامات اٹھا رہی ہے ؟وزیر خزانہ شوکت ترین نے ہر چیز تفصیل سے بتا دی 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ نیا این ایف سی مکمل ہونے میں وقت لگے گا، فاٹا کو پیسے دینا بہت ضروری ہے،فاٹاکوتین فیصدفنڈزکی فراہمی کیلئےکوشاں ہیں،این ایف سی میں صوبوں کو 57.5 فیصد فنڈز کی فراہمی میں نے کروائی تھی، سول آرمڈ فورسز، احساس پروگرام اور ایچ ای سی کے اخراجات وفاق اٹھا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق  جنید اکبر کی زیر صدارت فاٹا کی ترقی کیلئے قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی کا اجلاس ہوا ،سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے بھی کمیٹی اجلاس میں شرکت کی ۔وزارت خزانہ حکام کی فاٹا سے متعلق مالی امور اور این ایف سی پر بریفنگ دی گئی ۔بریفنگ میں بتایا گیا کہ قابل تقسیم محاصل میں فاٹا سمیت پختوانخواہ کا حصہ 17.53 فیصد ہے، فاٹا کا مجموعی ترقیاتی بجٹ 60 ارب روپے ہے، وفاقی حکومت 10 ارب روپے فراہم کر چکی ہے، صوبائی حکومت نے 45 ارب روپے فراہم کئے ۔

سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ افغانستان کی صورت حال سے خطے میں تبدیلی آچکی ہے، ہمارے پاس وقت کم ہے، فاٹا کیلئے تعمیری کام کرنا چاہتے ہیں ، خصوصی کمیٹی میں تمام جماعتوں کو نمائندگی دی گئی ہے، فاٹا ایک پسماندہ اور محروم علاقہ ہے، ہمیں ایسے معاملات پر سیاست نہیں کرنی چاہئے، سب مل کر فاٹا کی بہتری کیلئے کام کریں گے۔

اس موقع پروزیرخزانہ نےکہا کہ  فاٹا کےلوگ دہشت گردی سے بہت متاثر ہوئے ہیں،سول آرمڈ فورسز کو 170 ارب روپے دے رہے ہیں ، 270 ارب کا احساس پروگرام وفاق سپانسر کر رہا ہے، ایچ ای سی کو بھی 120 ارب روپے فراہم کیئے جارہے ہیں،سماجی تحفظ صوبوں کی بھی ذمہ داری ہے، وہ بھی حصہ ڈالیں، نئے این ایف سی میں اس مسئلے کا حل نکالیں گے، کامیاب پاکستان پروگرام رواں ماہ شروع کریں گے ، گھروں کی تعمیر کیلئے 2 فیصد شرح سود پر قرضہ دیا جائے گا، چھوٹے کاروبار کیلئے پانچ لاکھ روپے تک بلا سود قرضہ دیں گے،ہرفصل کیلئے قرضہ اور عوام کو صحت کارڈ دیں گے ، پختوانخوا، فاٹا اور بلوچستان میں پروگرام پہلے شروع کریں گے، خصوصی علاقوں کو 2023ء تک ٹیکس مراعات دی گئی ہیں، وفاقی حکومت فاٹا کو ترقیاتی فنڈز بھی دے رہی ہے، پانچ سال کی ٹیکس ہالیڈے کا 2023ء میں دوبارہ جائزہ لیں گے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -