ایس پیز کی کیڈر تبدیلی کیخلاف درخواست پرفریقین سے جواب طلب

 ایس پیز کی کیڈر تبدیلی کیخلاف درخواست پرفریقین سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے ایس پیز کو پرونشل کیڈرسے پی ایس پی کیڈربھجوانے کیخلاف درخواست پر اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل کوآئندہ سماعت پر معاونت کے لئے طلب کرتے ہوئے فریقین کوجواب کیلئے آئندہ سماعت تک مہلت دے دی  کیس کی سماعت شروع ہوئی تو فاضل جج نے وکلاء سے استفسار کیا کہ پولیس افسروں کو ساتھ کیوں لائے ہیں؟میرے پاس توصرف ایک کیس نوید شہزاد کا کیس چل رہا ہے، وکلاء نے کہا یہ سب ایس پیز درخواست گزار ہیں، درخواست گزار پرونشل کیڈر کے پولیس افسر ہیں، سید محمد عباس،خالدمحموداورآفتاب پھلروان سمیت دیگرایس پیزکی طرف سے وقار اے شیخ ایڈووکیٹ نے موقف اختیارکیا کہ ایک درخواست گزار نوید شہزاد کے کیس کے سارے جواب جمع ہیں اور جواب الجواب بھی جمع ہیں  عدالت نے کہا کہ ہم تمام کیسز کو اکھٹا سنیں گے، سب کے جواب آجائیں پھر ان کیسز کو سنیں گے، درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ گریڈ 19 میں ہماری ترقی پنجاب سول سرونٹ ایکٹ کے تحت کی جاسکتی ہے، پنجاب گورنمنٹ رولز آف بزنس کی دفعہ 23 شیڈول 4 کے مطابق وزیراعلی مزید ترقی کے لئے مجاز اتھارٹی ہے، پنجاب گورنمنٹ رولز آف بزنس کے تحت ایس ایس پی، ڈی آئی جی اور ایڈیشنل آئی جی تک ترقی ہو سکتی ہے، اب ایس پی سے مزید ترقی دینے کی بجائے انہیں زبردستی پی ایس پی کیڈر میں شامل کروالیا جاتا ہے، زبردستی پی ایس پی کیڈر میں شامل کرنا آئیں کی مختلف شقوں سے متصادم ہے، عدالت سے استدعاہے کہ ایس پیز کو زبردستی پی ایس پی کیڈر میں شامل کرنے کا اقدام کالعدم قرار دیتے ہوئے درخواست گزاروں کو پرونشل کیڈر میں رکھتے ہوئے محکمانہ ترقی کا بھی حکم دیا جائے۔

جواب طلب

مزید :

صفحہ آخر -