جیف بیزوس کی کمپنی کا راکٹ لانچنگ کے دوران حادثے کا شکار

جیف بیزوس کی کمپنی کا راکٹ لانچنگ کے دوران حادثے کا شکار
جیف بیزوس کی کمپنی کا راکٹ لانچنگ کے دوران حادثے کا شکار
سورس: Twitter

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کی سب سے بڑی ای کامرس کمپنی ایمازون کے بانی جیف بیزوس کا بلیو اوریجن نامی راکٹ لانچنگ کے دوران پہلی بار حادثے کا شکار ہو گیا۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق یہی وہ راکٹ ہے جس کے ذریعے انسانوں کو دنیا کے کنارے تک لیجایا جاتا ہے اور خلاءکی سیر کرائی جاتی ہے۔ پیر کے روز اس راکٹ کے کیپسول میں کئی تجربات سے متعلق سازوسامان رکھ کر اسے لانچ کیا گیا کہ اسی دوران یہ دھماکے سے پھٹ گیا۔

رپورٹ کے مطابق راکٹ کے لانچ ہونے کے ایک منٹ کے اندر ہی اس میں خرابی آ گئی اور وہ پھٹ کر دیکھتے ہی دیکھتے آگ کے گولے میں بدل گیا۔ پھٹنے کے وقت راکٹ 28ہزار فٹ کی بلندی پر تھا اور 1ہزار 126کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کر رہا تھا۔یہ حادثہ ’میکس۔کیو‘ (Max-q)مرحلے میں پیش آیا۔ اسی مرحلے میں راکٹ پر سب سے زیادہ پریشر ہوتا ہے۔

راکٹ کے ساتھ موجود کیپسول، جس میں تجربات سے متعلق سامان تھا، حادثے کے دوران راکٹ سے الگ ہو کر واپس زمین کی طرف گرنا شروع ہوا اور بالآخر اس کے پیراشوٹس کھل گئے اور وہ بحفاظت زمین پر آ گیا۔ یہ کیپسول ویسٹ ٹیکساس کے صحرائی علاقے میں زمین پر اترا۔اس کے زمین پر لینڈ کرنے کی ویڈیو انٹرنیٹ پر پوسٹ کی گئی ہے جو تیزی سے وائرل ہو رہی ہے۔فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن کی طرف سے بلیو اوریجن کی آئندہ تمام لانچنگ منسوخ کر دی گئی ہیں جو اس واقعے کی تحقیقات مکمل ہونے تک منسوخ رہیں گی۔

مزید :

بین الاقوامی -