آئین کے تحفظ کیلئے پر عزم ہیں خواتین کو ووٹ کا برابر حق ملنا چاہئے

آئین کے تحفظ کیلئے پر عزم ہیں خواتین کو ووٹ کا برابر حق ملنا چاہئے

            کوئٹہ ( آئی این پی ) چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے کہا ہے کہ ہم آئین کے تحفظ کے لئے پرعزم ہیں ، بلوچستان کو امن وامان اور گورننس سمیت دیگر مسائل کا سامنا ہے ۔ الیکشن کو صاف و شفاف بنانے کےلئے ریٹرنگ افسروں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے ، ریٹرننگ افسران عدلیہ کی نمائندگی کررہے ہیں ، آئینی اداروں کا فرض ہے کہ وہ انتخابات سے متعلق الیکشن کمیشن کی مدد کریں ۔ خواتین کو بھی انتخابات میں حصہ لینے اور ووٹ ڈالنے کا برابر حق ملنا چاہیے ۔ ووٹرز انتخابات میں سب سے بڑے فریق ہیں ، عوامی نمائندے کوشش کریں تو تبدیلی کی توقع کی جاسکتی ہے ۔ وہ اتوار کو یہاں ریٹرننگ افسران سے خطاب کر رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم آئین کے تحفظ کے لئے پرازم ہیں ۔ بلوچستان کو امن وامان اور گورننس سمیت دیگر چیلنجز کا سامنا ہے ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ الیکشن سے متعلق ریٹرننگ افسروں پر بڑی ذمہ داری ہے کیونکہ ریٹرننگ افسران عدلیہ کی نمائندگی کررہے ہیں ریٹرننگ افسران کی ذمہ داری ہے کہ شفاف انتخابات کو یقینی بنایا جائے ۔ افتخار محمد چودھری نے کہا کہ بلوچستان میں عدلیہ نے پہلے بھی کامیابی سے کام کرتے ہوئے اپنے اہداف کو مکمل کیا ہے اور اب بھی کامیابی سے کام کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تمام آئینی اداروں کا فرض ہے کہ وہ انتخابات سے متعلق الیکشن کمیشن کی مدد کریں اور خواتین کو بھی انتخابات میں حصہ لینے اور ووٹ ڈالنے کے مساوی حق ملنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ بہت سارے ووٹرز کو صحیح نمائندگی نہیں ملتی جبکہ انتخابات میں ووٹرز سب سے بڑے اسٹیک ہولڈرز ہوتے ہیں ۔ چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے کہا کہ عوامی نمائندے سامنے آئے تو اس ملک میں تبدیلی کی توقع کی جاسکتی ہے ۔

افتخار چودھری

مزید : صفحہ اول