سانحہ بادامی باغ میں سابق ایم پی اے شہباز چودھری ملوث تھے، خفیہ ادارے کی رپورٹ

سانحہ بادامی باغ میں سابق ایم پی اے شہباز چودھری ملوث تھے، خفیہ ادارے کی ...

لاہور(جاوید اقبال) سانحہ جوزف کالونی بادامی باغ کے واقعہ کے بارے خفیہ ادارے ( آئی بی) نے رپورٹ جاری کی ہے جس میں مسلم لیگ ن کے حلقہ پی پی 143 سے سابق ایم پی اے شہباز چودھری ، پی پی 143 میں مسلم لیگ ن کے صدر غزالی سلیم بٹ اور مسلم لیگ ن کے ٹریڈر زونگ کے اہم رہنما میاں آصف کو ملوث کردیا گیا ہے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ اہم رہنما جوزف کالونی میں گھیراﺅ جلاﺅ میں سرفہرست اور پیش پیش رہے ہیں اور انہوں نے لوگوں کے مذہبی جذبات ابھارنے میں اہم کردار ادا کیا۔ یہ فرنٹ لائن پر تھے اور ایس پی سٹی ملتان خان سے اس واقعہ سے ایک روز قبل آبادی خالی کروانے میں اہم کردار ادا کیا۔ جب پولیس افسر نہ مانے تو ان شخصیات نے قریبی حلقہ سے سابق ایم این اے پرویز ملک یا کسی اور شخصیت سے موبائل پربات بھی کرائی، سابق ایس پی سٹی ملتان خان نے جن اہم لوگوں کو ٹیلی فون کرکے مشتعل ہجوم کو کنٹرول کرنے کے لئے بلایا بعد میں ان کے خلاف مقدمات درج کرادیئے مگر اصل ذمہ داری کو نہ صرف بچا لیا گیا بلکہ انہیں صاف باہر کردیا گیا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ایک خفیہ ادارے نے اپنی رپورٹ پولیس کے اعلیٰ حکام کو پیش کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سانحہ بادامی باغ جوزف کالونی میں ہجوم کو مشتعل بنانے میں فرنٹ لائن قیادت کا رول مسلم لیگ ن کے بعض اہم لوگوں نے ادا کیا جس میں حلقہ پی پی 143 سے سابق رکن پنجاب اسمبلی شہباز چودھری ، پی پی 143 میں مسلم لیگ ن کے صدر سلیم غزالی بٹ بھی پیش پیش تھے، جن میں آصف نامی تاجر رہنما سمیت 22 اہم لوگ سرفہرست تھے، مگر انہیں مقدمہ سے صاف بچالیا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آبادی خالی کروانے میں بھی ان لوگوں نے اہم رول ادا کیا ہے۔

جوزف کالونی

مزید : صفحہ آخر