کچہ آپریشن پر آئی جی نہیں وزیراعلی پنجاب مستعفی ہوں،غلام فرید کوریجہ

کچہ آپریشن پر آئی جی نہیں وزیراعلی پنجاب مستعفی ہوں،غلام فرید کوریجہ

  



میر ہزار خان(نامہ نگار)کچہ جمال آپریشن پر آئی جی پنجاب کو نہیں وزیراعلی پنجاب کو مستعفی ہونا چاہیے۔پنجاب میں کوئی نوگوایریاز نہیں کا راگ الاپنے والے رانا ثناء اللہ بتائی کچہ جمال کیا ہے۔آپریشن میں شہید ہونے والے ایس ایچ او کے اہل خانہ کو ایک کروڑ اور سپاہیوں کو پچاس لاکھ ورپے (بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

دیے جائیں۔ان خیالات کا اظہار سربراہ سرائیکستان قومی اتحاد خواجہ غلام فرید کوریجہ نے ممبر نیشنل کونسل ایس کیو آئی مہر محمد اسحاق سیال کی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ کچہ جمال کا علاقہ چھوٹو گینگ نے نوگوایریا بنارکھا ہے۔حکومت ان کی مجرمانہ طاقت اور وسائل سے اچھی طرح آگاہ تھی۔اس کے باوجود ناکارہ اسلحے سے لیس پولیس کو جنگل میں مورچہ زن جدید اسلحہ سے لیس ڈاکوؤں کے خلاف آپریشن پر لگادیا گیا۔کچہ کے علاقے میں جدید اسلحہ سے لیس اعلی تربیت یافتہ رینجرز اور فوج کے ذریعے آپریشن ناگزیر تھا مگر دانستہ اس سے گریز کیا گیا۔اور بہت بڑا سانحہ رونما ہوگیا۔حکومت سرائیکی وسیب کے لوگوں کے جان و مال کے تحفظ میں ناکام ہوچکی ہے۔تخت لاہور کا تحفظ ہی حکومت کی پہلی اور آخری ترجیح ہے۔راجن پور پولیس نے قربانی کی عظیم مثال پیس کرکے تخت لاہور کے سوتیلے سلوک کو بھی بے نقاب کردیا ہے۔شہید افسروں اور سپاہیوں کی قربانیاں،رنگ لائیں گی۔کرپشن اور دہشت گردی اور ڈاکا زنی کے خلاف فوج اور رینجرز کی زیر نگرانی آپریشن کیا جائے۔جام فیض الہ،اعجاز احمد مندوانی ایڈووکیٹ،حاجی خادم حسین،مہر محمد اسحاق سیال،محمد عاقب عطاری اور عبدالحکیم ابڑیند بھی پریس کانفرنس کے موقع پر موجود تھے۔

غلام فرید کوریجہ

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...