پانامہ لیکس کے انکشافات ،حکومت نے خود کو بچانے کیلئے اپنی سیاسی صف بندی کر لی

پانامہ لیکس کے انکشافات ،حکومت نے خود کو بچانے کیلئے اپنی سیاسی صف بندی کر لی

  



لاہور( جاوید اقبال ‘ شہزاد ملک) پانامہ لیکس کے انکشافات پر پاکستان کی سیاست میں آنے والے سیاسی بھونچال پر حکومت نے خود کو بچانے کے لئے اپنی سیاسی صف بندی مکمل کر لی ہے اورا س سلسلے میں حکومت نے اپنے اتحادیوں کو اپنی صف بندی میں شامل کر لیا ہے جس کے بعد اس بات کا قوی امکان پیدا ہو گیا ہے کہ حکومت تحریک انصاف کے حکومت مخالف ماضی کے 2014کے ہونے والے دھرنے میں جس طرح حکومت بچ نکلی تھی ٹھیک اسی طرح پانامہ لیکس میں بھی صاف بچ نکلے گی چونکہ حکومت نے پارلیمینٹ کے اندر اور باہر موجود اپنی اتحادی جماعتوں کو اپنے ساتھ کھڑا کر لیا ہے اور اس کا اگر تقابلی جائزہ لیا جائے تو پانامہ لیکس اور تحریک انصاف کے 2014کے دھرنے میں وہی جماعتیں حکومت کے ساتھ کھڑی ہیں جو 2014 کے دھرنے کے وقت کھڑی تھیں ۔تفصیلات کے مطابق حکومت نے پانامہ لیکس پر اپنے موقف کے ساتھ اپوزیشن جماعت پاکستان پیپلز پارٹی ‘جے یو آئی (ف) ‘ اے این پی ‘ پشتنخواہ ملی پارٹی‘ ایم کیو ایم ‘ جمعیت اہل حدیث کو اپنا ہم خیال کر لیا ہے ۔ذرائع کا یہ بھی دعوی ہے کہ حکومت نے اس معاملے پر جماعت اسلامی کے بعض اہم رہنماؤں کو بھی اپنے ساتھ کر لیا ہے جو وزیراعظم سے اس معاملے پر استعفی طلب کرنے کے حامی نہیں ہیں ۔دوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے ساتھ 2014 کے دھرنے کے وقت جو جماعتیں ان کے ساتھ کھڑی تھیں وہی آج پانامہ لیکس کے معاملے پر بھی ان کے ساتھ ہیں کوئی نئی جماعت اس ایشو پر بھی تحریک انصاف کے ساتھ شامل نہیں ہوئی آج بھی تحریک انصاف کے ساتھ مسلم لیگ (ق) پاکستان عوامی تحریک ‘عوامی مسلم لیگ اور جماعت اسلامی کے بعض رہنما کھڑے ہیں ۔ذرائع کا دعوی ہے کہ اس صورت حال کے باعث حکومت مخالف کوئی بڑی تحریک شروع ہونے کے امکانات انتہائی کم ہیں ۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ لندن میں حکومت اپوزیشن کے اہم راہنماؤں کی ملاقاتوں کے بعد پانامہ لیکس کی آگ کی شدت میں بڑی حد تک کمی آ جائے گی اور حکومت کے لئے مطلع صاف ہو جائے گا تاہم آفٹر شاکس محدود مدت تک آتے رہیں گے جس کے بعد آہستہ آہستہ معاملات ٹھیک ہو جائیں گے اس حوالے سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ لندن میں پاکستان کی سیاست کی قد آور شخصیات کی موجودگی کی وجہ سے پاکستان کی عوام کی نظریں لندن پر جمی ہوئی ہیں اور پاکستان کی بجائے لندن محاز گرم ہے ۔ذرائع کا دعوی ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین آصف علی زرداری نے وزیراعظم کو اندرون خانہ یہ یقین دہانی کروادی ہے کہ اگر انہیں پانامہ لیکس کی وجہ سے کوئی خطرات ہوں گے تو وہ ان کا بھرپور ساتھ دیں گے اور حکومت کو گرنے نہیں دیں گے اور ماضی کے تحریک انصاف کے دھرنے کو ناکام بنانے کے لئے اپنا سیاسی کردار بھی ادا کرتے رہیں گے اور تحریک انصاف کو اس ایشو پر سیاست نہیں چمکانے دیں گے۔

مزید : کراچی صفحہ اول