2017 تک پاکستان سے پولیو ختم ہوجائے گا، بل گیٹس

2017 تک پاکستان سے پولیو ختم ہوجائے گا، بل گیٹس

  



دوحہ(آن لائن) مائیکروسوفٹ کے بانی بل گیٹس کا کہنا ہے کہ 2017 تک پاکستان اور افغانستان سے پولیو کا خاتمہ ہو جائے گا.ان خیالات کا اظہار بل گیٹس نے قطر کے دارالحکومت دوحہ میں 'دی لائیو اینڈ لائیولی ہڈ فنڈ' کو 5 کروڑ ڈالر کا عطیہ دینے کی سرکاری تقریب کے دوران کیا، جو 'بل اینڈ ملینڈا گیٹس فاؤنڈیشن' اور 'دی اسلامک ڈویلپمنٹ بنک(آئی ڈی بی)' کا مشترکہ فنڈ ہے.یہ فنڈ 2012 سے پولیو اور دیگر بیماریوں کے خاتمے کے لیے کام کر رہا ہے.عالمی بیماریوں سے بچاؤ کے لیے اربوں ڈالر عطیہ کرنے والے بل گیٹس کا کہنا تھا کہ پولیو کایہ معاملہ گھٹ کر صرف 2 ممالک پاکستان اور افغانستان میں رہ گیا ہے اور رواں سال یا اگلے سال تک پولیو کیسز ختم ہوجائیں گے. یاد رہے کہ پاکستان نے 2016 تک ملک سے پولیو کے خاتمے کا سرکاری ہدف مقرر رکھا ہے، تاہم اس سال اب تک پولیو کے 8 کیسز سامنے آچکے ہیں۔اگرچہ پاکستان اور افغانستان وہ 2 ممالک ہیں جہاں یہ بیماری ابھی تک موجود ہے، تاہم دنیا میں پولیو کے خاتمے کے حوالے سے کام کرنے والی تنظیم کے اعدادوشمار کے مطابق ابھی تک 8 ممالک ایسے موجود ہیں جو اس وائرس کے خطرے سے دوچار ہیں، جن میں کیمرون، جنوبی سوڈان اور شام شامل ہیں۔دنیا کی امیر ترین شخصیات کی فہرست میں شامل بل گیٹس، ملیریا کے خلاف اپنی جدوجہد کے لیے بھی مانے جاتے ہیں، جنھوں نے ملیریا کو 'دنیا کا سب سے بڑا قاتل' قرار دیا.واضح رہے کہ رواں سال کے آغاز میں انہوں نے ملیریا کے خاتمے کے لیے 4 بلین ڈالر کا فنڈ قائم کیا.دوحہ میں وصول کیا گیا عطیہ آئی ڈی بی کی فہرست میں شامل 30 غریب ممالک میں سرمایہ کاری کے لیے استعمال کیا جائے گا، جس کا مقصد دنیا کے کچھ غریب ممالک کے بوجھ کو امداد اور قرضِ حسنہ کے ذریعے کم کرنا ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...