متنازعہ 25 دیہات ،احتجاجی دھرنا مشروط طور پر ختم کرنے کا فیصلہ

متنازعہ 25 دیہات ،احتجاجی دھرنا مشروط طور پر ختم کرنے کا فیصلہ

  



مہمند ایجنسی ( نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی، متنازعہ پچیس دیہات کے عمائدین نے احتجاجی دھرنا مشروط طور ختم کرنیے کا فیصلہ کیا۔ گزشتہ تین ماہ سے جاری دھرنے کے ساتھ پی ٹی آئی رہنماؤں ساجد خان اور ملک نوید احمد نے کامیاب مذاکرات کئے۔ عوامی مطالبات مشترکہ طور پر حکام بالا کے نوٹس میں لانے پر اتفاق۔ تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف مہمند ایجنسی کے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق پارٹی رہنماؤں ساجد خان اور ملک نوید احمد نے متنازعہ پچیس دیہات کے عمائدین کے تین ماہ سے مطالبات کے حق میں دیئے گئے دھرنے کے مقام پر گئے اور دھرنے کے رہنماؤں حاجی عبدالجلیل، ملک گوہر اور دیگر شرکاء کے ساتھ کامیاب مذاکرات کئے۔ پی ٹی آئی مہمند ایجنسی کی طرف سے دھرنے دینے والوں کو یقین دلایا گیا کہ ان کے حقوق اور جائز مطالبات تسلیم کرانے کیلئے ان کے ساتھ مشترکہ جدوجہد کرینگے۔ پی ٹی آئی رہنماؤں نے کہا کہ صوبائی حکومت مہمند ایجنسی کے متنازعہ دیہات کے مسئلے کی حل میں سنجیدہ ہے اور اس عرض سے پی ٹی آئی مہمند نے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور دیگر حکام کو دھرنے اور علاقے کے عوام کے تحفظات سے آگہا کردیا ہے۔ جنہوں نے اس مسئلے کی حل کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ کامیاب مذاکرات کے بعد متنازعہ دیہات نے دھرنا ختم کرنے اور مطالبات کے لئے جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...