انصاف کے دعویداروں کی حکومت میں انصاف نہیں مل رہا ،حسن زادہ

انصاف کے دعویداروں کی حکومت میں انصاف نہیں مل رہا ،حسن زادہ

  



بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر )ریگا بونیر سے تعلق رکھنے والے ریٹائیرڈ گیج ریڈر ہاڈرالوجی ڈیپارٹمنٹ حسن ذادہ مظلوم نے کہاہے کہ صوبہ میں اسلام کے دعویداروں اور انصاف کے علمبرداروں کی حکومت میں عوام کے ساتھ ظلم کی انتہاء ہورہی ہے ۔میری بیٹی کی نوکری اس دور میں میرے بیٹے کے ہم نام سوات سے تعلق رکھنے والے کو دی گئی ۔میں چودہ مہینوں سے بونیر کے مرکزی بازار سواڑی میں دھرنا دئے بھیٹاہوں ۔مگر مجھے ابھی تک انصاف نہیں ملا ۔اگر میرے بیٹے کو اسکا جائز حق نہ ملا تو عنقریب اپنے ساتھ دھرنے میں نواسوں ،نواسیوں کو بھی شامل کروں گا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈگر میں ہمارے نمائندہ سے خصوصی گفتگوں کرتے ہوئے کیا ۔حسن ذادہ مظلوم نے کہا کہ میں نے اپنے محکمہ میں اپنی زندگی کے قیمتی ساٹھ سال گزارے اور ریٹائیرڈ ہوگیا ۔میں نے اپنے پوسٹ پر اپنے بیٹے کی کاعذات جمع کرائے جس نے باقاعدہ ٹیسٹ اور انٹر ویو دیا اور اسکے لئے اہل قرار دیا گیا ۔مگر صوبائی وزیر محمود خان اور بونیر سے تعلق رکھنے والے عشر زکوات کے وزیر نے ساز باز کرکے میرے بیٹے کو نوکری دینے کی بجائے سوات مٹہ سے تعلق رکھنے والے کو نوکری دی ۔جنہوں نے اٹھ ماہ گزرنے کے بعد بھی بونیر کا رخ نہیں کیا ،مگر باقاعدہ گی سے تنحواہ لے رہاہے ،میں نے اس ظلم کے خلاف سواڑی بازار میں دھرنادیا ،پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس کی اور اپنا احتجاج صوبائی اسمبلی تک پہنچایا ۔مگر اسلام اور انصاف کے دعویدار صوبائی حکومت پر کو ئی اثر نہیں ہوا ،حسن ذادہ نے کہا کہ میں قومی وطن پارٹی کے صوبائی وزیر سکندر خان شیر پاؤں کو اپنے ساتھ ہونے والے ظلم سے اگاہ کیا ،میں نے اپنا فریاد ضلعی انتظامیہ سے لیکر پاک آر می تک پہنچایا ۔مگر کہیں سے مجھے انصاف نہیں ملا ،میں نے فیصلہ کیا ہے کہ اگر مجھے 30 اپریل تک انصاف نہیں ملا تو مجبور ہوکر میں اپنے نواسوں اور نواسیوں کو اپنے ساتھ دھرنے میں بھٹانے پر مجبور ہوگا ۔اور میں روزانہ کی بنیاد پر اس کرپٹ حکمرانوں کے خلاف بددعائیں دیتارہوں گا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...