سرکاری خرچ پر وزیراعظم کے بیرون ملک علاج ،ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب مانگ لیا

سرکاری خرچ پر وزیراعظم کے بیرون ملک علاج ،ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب مانگ لیا
سرکاری خرچ پر وزیراعظم کے بیرون ملک علاج ،ہائی کورٹ نے حکومت سے جواب مانگ لیا

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے سرکاری خزانے سے وزیر اعظم کے بیرون ملک علاج کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت اور اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔مسٹرجسٹس محمد خالد محمود خان نے کیس کی سماعت شروع کی تودرخواست بیرسٹر سید محمد جاوید اقبال جعفری نے موقف اختیار کیا کہ عام آدمی کو ہسپتالوں میں ادویات تک دستیاب نہیں ،ملک قرضوں کے بوجھ کے نیچے دبا ہے مگر وزیر اعظم سرکاری خرچ پر بیرون ملک علاج کرا رہے ہیں جو کہ واضح طور پر امتیازی سلوک کے مترداف ہے۔انہوں نے کہا کہ آئین کے تحت کسی بھی شہری کے ساتھ امتیازی سلوک نہیں کیا جا سکتا۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم اپنے دور حکومت میں ایک بھی ایسا ہسپتال تعمیر نہیں کرا سکے جس میں ان کا اپنا علاج ہو سکتا۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی سرکاری خرچ پر وزیر اعظم کے بیرون ملک علاج پر پابندی عائد کرنے کا حکم دیا جائے۔ عدالت نے وفاقی حکومت اور اٹارنی جنرل کو 11مئی کے لئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔

مزید : لاہور