مسلم کالج میں طلاب علم سے زیادتی، واپڈا ہائیڈویونین کا احتجاجی مظاہرہ

مسلم کالج میں طلاب علم سے زیادتی، واپڈا ہائیڈویونین کا احتجاجی مظاہرہ

  

ملتان(سٹاف رپورٹر) تونسوی برادران کے مسلم کالج میں کمسن طالب علم کے ساتھ زیادتی کے واقعہ کے خلاف واپڈا ہائیڈرو ورکرز یونین ( سی بی ا ے )نے ریجنل جوائنٹ سیکرٹری و چیئرمین سٹی سب ڈویژن ملک عبدالرحیم مجاہد اعوان کی قیادت میں احتجاجی مظاہرہ کیا‘ ہائیڈرو یونین کے سینئر رہنما ملک عبدالرحیم مجاہد اعوان نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی ادارے کے ہاسٹل میں کمسن طالب علم کے ساتھ زیادتی قابل مذمت ہے ‘ یوں معلوم ہوتا ہے کہ کالج مالکان تونسوی برادران کو بچے کے ساتھ زیادتی کے واقعہ پر افسوس نہیں ہے ‘ انہیں فکر ہے تو اس بات کی کہ ایسے واقعات چاہے ہوتے رہیں لیکن منظر عام پر نہ آئیں‘ جس بچے کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے ‘ اس کے ماں باپ پر کیا بیتی ہے ‘اس کا اندازہ کوئی دوسرا نہیں کرسکتانہ ہی اس کا مداوا ہو سکتا ہے‘ زیادتی کا شکار ہونے والے بچے نفسیاتی مریض بن جاتے ہیں اوران کا مستقبل تباہ ہو جاتا ہے‘ ہمارا مطالبہ ہے کہ مسلم کالج کے ہاسٹل میں بچے کے ساتھ زیادتی کے ذمہ دار تونسوی برادران کے خلاف بھی کارروائی کی جائے اور تحقیقات کی جائیں کہ وہاں دیگر بچوں کے ساتھ کیا ہو رہا ہے‘ تعلیمی اداروں میں بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات کا خادم اعلیٰ پنجاب شہباز شریف خصوصی طور پر نوٹس لیں اورزیادتی کے جائے مقام مسلم کالج کو بند کیا جائے ‘ انہوں نے کہا کہ اگر حکام نے زیادتی کے واقعات کے ذمہ داران کے خلاف کارروائی نہ کی تو احتجاج کا دائرہ کار وسیع کر دیا جائے گا‘ احتجاجی مظاہرے میں حاجی عبدالعزیز‘ محمد سلطان‘ رانا محمد اسلم‘سید طاہر عباس‘ محمد عدنان‘ محمد ریاض‘ محمد اجمل‘ محمود انصاری‘ محمد ارشد‘ ریاض ناصر‘ غلام فرید‘ محمد شہزاد اور دیگر نے شرکت کی۔ واضح رہے کہ سلیم تونسوی اور نعیم تونسوی کے اڈا لاڑ پر قائم کردہ مسلم کالج کے ہاسٹل میں مقیم 13سال طالب علم (الف) کو زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا رہا ‘ بچے کو دیگر طلبا زیادتی کا نشانہ بناتے رہے معصوم بچہ خوف اور ڈر کے مارے خاموش رہا‘ چند روز قبل ہاسٹل میں مقیم کوٹ مٹھن کے رہائشی مغیث اورندیم عابد نے روم میٹ13سالہ طالب علم ( الف) کو ساری رات زیادتی کا نشانہ بنایاجس کے باعث(الف) کی حالت غیر ہو گئی اور اس کو تشویش ناک حالت میں نشترہسپتال داخل کرا دیا گیا‘پولیس تھانہ بستی ملوک نے مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کر دی‘یہ امر افسوسنا ک ہے کہ تونسوی برادران کے تعلیمی ادارے میں کمسن طالب علم کے ساتھ زیادتی کا یہ پہلا واقعہ نہیں ‘اس سے قبل بھی ان کے تعلیمی اداروں میں زیادتی کے مبینہ واقعات منظر عام پر آچکے ہیں‘ بتایا گیا ہے کچھ عرصہ قبل بھی مسلم ہائر سیکنڈری سکول پیپلز کالونی میں ایک کمسن طالب علم کو زیادتی کانشانہ بنایا گیا تھا جس پر ہلچل مچ گئی تھی مگر پھر بعد تونسو ی برادران نے دولت کے بل بوتے پر معاملہ دبا دیا اور ان کے ادارے میں اب ایک اور کمسن طالب علم کو زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -