پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے کیلئے معاشرے سے بد عنوانی ختم کرنا ہوگی:چیئرمین نیب

پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے کیلئے معاشرے سے بد عنوانی ختم کرنا ...

  

اسلام آباد ( آن لائن) قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین قمر زمان چودھری نے کہا ہے کہ بد عنوانی ایسی لعنت ہے جس کے معاشرے پر بہت زیادہ برے اثرات مرتب ہوتے ہیں جبکہ تاریخی لحاظ سے یہ ثابت ہوتاہے کہ ان قوموں نے ترقی کی جنہوں نے اپنے معاشر ے سے بد عنوانی اور ناانصافی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا اور اگر اسی تناظر میں اگر ہم پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنانا چاہتے ہیں تو یہ صرف اس صورت میں ممکن ہو سکتاہے کہ ہم اپنے معاشرے سے بد عنوانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکیں اور بد عنوانی کے خلاف زیر وٹالرنس پر عمل کریں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیب کی فرانزک سائنس لیبارٹری کی کارکردگی کے متعلق جائزہ اجلاس کے بعد افسران سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ نیب لوگوں کوبد عنوانی کے برے اثرات سے آگاہ کرنے کی کوشش کررہاہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ معاشرے سے بد عنوانی کے خاتمے کی ضروریات کوپورا کرنے کیلئے جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ فرانزک سائنس لیبارٹری قائم کی گئی ہے۔جس کا مقصد بد عنوانی کے ناسور کی روک تھام کیلئے ضروریات کو پورا کرناہے۔ انہوں نے کہاکہ نیب ملک سے بد عنوانی کے خاتمے اور قوم کو بد عنوانی سے بچانے کیلئے بلا امتیاز زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے کہاکہ نیب میں مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کا نظام وضع کیا گیا ہے تاکہ شکایات کی جانچ پڑتال ، انکوائریوں اور تحقیقات کو نمٹانے کیلئے تفتیشی افسران اور پراسیکیوٹر مل کر کام کریں ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -