محکمہ ایریگیشن کے ایکسین کو بعد از ریٹائرمنٹ ترقی نہ دینے پر برہمی

محکمہ ایریگیشن کے ایکسین کو بعد از ریٹائرمنٹ ترقی نہ دینے پر برہمی

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس وقاراحمدسیٹھ اور جسٹس اعجازانورخان پرمشتمل دورکنی بنچ نے عدالتی احکامات کے باوجود محکمہ ایریگیشن کے ایکسئین کو بعدازریٹائرمنٹ ترقی نہ دینے پربرہمی کااظہار کرتے ہوئے صوبائی حکومت کو ایک ہفتے کی مہلت دے دی اورعدالتی احکامات کی تعمیل نہ کرنے پرمتعلقہ حکام پرفردجرم عائد کرنے کی وارننگ دے دی عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز درخواست گذار ہدایت اللہ گنڈاپور سابق ایکسیئن ایریگیشن کی جانب سے دائررٹ پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذار کے خلاف نیب نے کیس بنایاتھا اور2004ء میں اس نے نیب سے پلی بارگین کی تھی بعدازاں سروس ٹربیونل نے ملازمت پربحال کردیاتھا اوراب ریٹائرڈ ہوچکاہوں اور بعداز ریٹائرمنٹ ترقی کی رٹ دائرکی تھی جو ہائی کورٹ منظورکرچکی ہے لیکن تاحال ترقی نہیں دی جارہی ہے اس موقع پر جسٹس وقار احمد سیٹھ نے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل پربرہمی کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ آپ لوگوں نے عدالت سے مذاق بنارکھاہے اورعدالتی احکامات پرعملدرآمد کیوں نہیں کیاجارہا ہے فاضل بنچ نے اس موقع پر متنبہ کیاکہ آئندہ ہفتے تک عدالتی احکامات پرعملدرآمد نہ ہونے کی صورت میں ذمہ داروں کے خلاف فردجرم عائد کی جائے گی ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -