پارا چنار ،سرکاری ملازمین کے زیراستعمال گاڑیوں کوپاس جاری کی جائے

پارا چنار ،سرکاری ملازمین کے زیراستعمال گاڑیوں کوپاس جاری کی جائے

  

پاراچنار(نمائندہ پاکستان ) پاراچنار میں سکولوں کے بچوں اور سرکاری محکموں میں کام کرنے وا لے گاڑیوں کو انٹری پاس جاری کیا جائے اور مریضوں کی ایمرجنسی گاڈیوں کو چیک پوائنٹس پر ٹوکن دینے کے انتظامات کئے جائیں۔ پاراچنار کے بشتر ایریا کو ریڈ زون قرار دینے کے بعد پاراچنار کے ارگرد چیک پوسٹوں پر صبح کے وقت گاڈیوں کے لمبی لمبی قطاریں نظر آتی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انسانی حقوق تنظیم HRCP کرم ایجنسی کے کواڈنیٹرعظمت علیزئی اور سماجی شخصیت شعبان بنگش نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہی کہ پاراچنار کے پرامن خالات کو دہشت گردوں نے دھماکوں سے خراب کرنے کی کوشش کی مگر کرم ایجنسی کے قبائل خاصکر طوری بنگش قبائل کو گذشتہ کئی سالوں سے اس لئے نشانے پر ہیں کہ یہ قبائل پاک فوج کے شانہ بشانہ پاک دھرتی کے محافظ ہیں۔ مسلسل دھماکوں کے بعد پاک آرمی نے پاراچنار کو ریڈ زون قرار دیا گیا ہے۔جن کے سبب ایک طرف تو عوام کو تخفظ اور دوسرے طرف پاراچنار شہر سنسان نظر آتی ہے۔اور صبح کے وقت پاراچنار کے اردگرد چیک پوائنٹ پر گاڈیوں کے لمبی لمبی قطاریں اپنی باری کے انتظار میں ہوتے ہیں جن کے سبب سکولوں اور سرکاری نوکریوں پر جانے والوں کو شدید مشکلات درپش ہونے کے ساتھ ساتھ ایمرجنسی گاڈیوں کو فوری طور پر ہسپتال نہ پہنچنے کے باعث مریض راستے میں فوت ہوتے ہیں۔ تو اس صورت میں ایمرجنسی گاڈیوں کو ایمرجنسی ٹوکن اور سکولز اور سرکاری ڈیپارٹمنٹ کے اہلکاروں کو پاس دیا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -