مجھ سمیت دوستوں کی ڈگریاں تاخیر کا شکار ہیں کیو نکہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر غائب ہیں،مشال خان آخری انٹر ویو

مجھ سمیت دوستوں کی ڈگریاں تاخیر کا شکار ہیں کیو نکہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر ...
مجھ سمیت دوستوں کی ڈگریاں تاخیر کا شکار ہیں کیو نکہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر غائب ہیں،مشال خان آخری انٹر ویو

  

مردان (ڈیلی پاکستان آن لائن )عبد الولی خان یونیورسٹی میں بے دردی سے قتل ہونے والا مشال خان ماس کمیونیکیشن کا طالب علم تھا اور اس نے قتل ہونے سے دو دن پہلے ایک نجی نیوز چینل کو انٹر ویو دیتے ہوئے یونیورسٹی میں پیش آنے والے تعلیمی مسائل پر بات کی تھی ۔آخری انٹر ویو میں مشال خان نے بتا یا تھا کہ اس سمیت دوستوں کی ڈگریاں تاخیر کا شکار ہیں کیو نکہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر غائب ہیں ۔مشال نے مطالبہ کیا تھا کہ یونیورسٹی حکام پرو وائس چانسلر مقرر کریں تا کہ تاخیر کا شکار ڈگریاں طلبا ءکو دی جا سکیں ۔اس موقع پر مشال نے سوال اٹھا یا کہ یونیورسٹی کے پروفیسرز نے ایک سے زیادہ عہدے کیو ں رکھے ہوئے ہیں ۔اس نے یونیورسٹی میں زیادہ فیس لیے جانے پر بھی آواز اٹھائی ۔

مشعل خان کا تعلق کس سیاسی جماعت سے تھا اور لوگوں کی اس سے کیو ں نہیں بنتی تھی ؟یونیورسٹی ملازم نے اندر کی بات بتا دی

ویڈ یو دیکھئے

مزید :

مردان -