بھارتی دہشتگرد فوجیوں کا کشمیری نوجوانوں پر تشدد ، ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی

بھارتی دہشتگرد فوجیوں کا کشمیری نوجوانوں پر تشدد ، ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ...
بھارتی دہشتگرد فوجیوں کا کشمیری نوجوانوں پر تشدد ، ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی

  

سرینگر (ڈیلی پاکستان آن لائن) کشمیر میں بھارتی فوجی وردی میں ملبوس دہشتگردوں کے ظلم و ستم کا سلسلہ جاری ہے۔ جمعہ کو ان درندوں نے ایک نوجوان کو اپنی گاڑی کے آگے باندھ لیا تھا جبکہ آج (ہفتہ کو) بھی انہی دہشتگرد فوجیوں نے نوجوانوں کے ایک گروپ کو پکڑ کر شدید تشدد کا نشانہ بنایا اور پاکستان مخالف نعرے لگانے پر مجبور کرتے رہے ، ایک اور ویڈیو میں بھی دیکھا جاسکتا ہے کہ کچھ دہشتگرد فوجی ایک نوجوان کو سڑک پر الٹا لٹا کر سر عام تشدد کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

چیئرمین آل پارٹیز حریت کانفرنس میر واعظ عمر فاروق نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر دو ویڈیوز شیئر کی ہیں جو بڈگام میں فلمائی گئی ہیں۔ ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بھارتی وحشی درندوں نے پہلے تو چند نوجوانوں کو پکڑ کر خوب تشدد کا نشانہ بنایا اور ان میں سے ایک نوجوان کو مار مار کر لہو لہان کردیا ۔ جس کے بعد ان نوجوانوں کو گاڑی میں بٹھا کر پاکستان مخالف نعرے لگواتے رہے۔ اس دوران بھارتی دہشتگرد فوجی کشمیری نوجوانوں کو پنجابی زبان میں گالیاں بھی دیتے رہے۔

بھارتی فوج نے کشمیری نوجوان کو جیپ کے آگے باندھ دیا ، ویڈیو سامنے آنے پر لوگوں کی شدید تنقید

میر واعظ کی جانب سے شیئر کی گئی دوسری ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک نوجوان کو دو پولیس اہلکاروں نے سڑک پر الٹا لٹا رکھا ہے جبکہ انہی میں سے ایک دہشتگرد مظلوم نوجوان پر لاٹھیاں برساتا ہے۔ نوجوان جب درد سے تڑپنے لگتا ہے تو دو مزید دہشتگرد اپنے ساتھیوں کی مدد کو آتے ہیں اور اپنے پاﺅں تلے نہتے نوجوان کے جسم کو روندتے ہیں۔

کشمیر ہمارا ہے ، بھارتی فوجی کو ایک تھپڑ کے بدلے 100جہادی شہید کر دو : گوتم گھمبیر

واضح رہے کہ جمعہ کے روز بھی کچھ بھارتی درندوں نے ایک کشمیری نوجوان کو اپنی گاڑی کے آگے باندھ کر مودی سرکار کا گھناﺅنا چہرہ پوری دنیا کے سامنے دکھا دیا تھا۔گزشتہ سال جولائی میں برہان مظفر وانی کی شہادت کے بعد سے تاحال کشمیر میں بھارتی مظالم کا سلسلہ جاری ہے جس میں سینکڑوں لوگ شہید ہو چکے ہیں لیکن چھوٹی چھوٹی باتوں پر نوٹس لینے والی عالمی برادری نہتے کشمیریوں کی مدد کو نہیں آئی جو عالمی برادری کے دہرے معیار کو ثابت کرتی ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -